سعودی حکومت کی اجازت کے بعد پہلی اسرائیلی کمرشل فلائٹ دبئی پہنچ گئی

اسرائیل کی متحدہ عرب امارات کیلئے پہلی کمرشل فلائٹ 166 مسافروں کو لے کر دبئی پہنچ گئی۔
اسرائیل کے دارالحکومت تل ابیب سے اسرائیلی ائیرلائن ’اسیر‘ کا طیارہ منگل کو 166
مسافروں کو لے کر متحدہ عرب امارات روانہ ہوا اور سعودی فضائی حدود استعمال کرتے ہوئے دبئی انٹرنیشنل ائیرپورٹ پر اترا۔

امارات اور اسرائیل کے درمیان سفارتی تعلقات قائم ہونے کے بعد پہلی کمرشل فلائٹ تھی جبکہ پہلی پرواز کیلئے 170افراد نے بکنگ کرائی تھی، تل ابیب سے پہلی کمرشل فلائٹ 3 گھنٹے کی پرواز کے بعد دبئی پہنچی۔
رپورٹس کے مطابق دبئی کیلئے اسرائیل کی پہلی کمرشل پرواز سعودی عرب کی فضائی حدود کے استعمال کی اجازت نہ ملنے پر ملتوی ہونے کا امکان تھا تاہم پیر کو سعودی عرب نے اسرائیل کو فضائی حدود استعمال کی اجازت دی جس کے بعد منگل کی صبح فلائٹ نے تل ابیب سے اڑان بھری۔
اسرائیلی میڈیا نے دعویٰ کیا ہے کہ سعودی عرب نےاسرائیل کودبئی کیلئے فضائی حدوداستعمال کرنےکی اجازت دےدی ہے ۔

رپورٹس کے مطابق اسرائیل کو4 دن کیلئے سعودی فضائی حدوداستعمال کرنےکی اجازت ہوگی تاہم اسرائیل کودیگرممالک کےلیےسعودی حدوداستعمال کرنےکی اجازت نہیں ہوگی۔
وہیں دوسری جانب اسرائیلی فضائی کمپنیوں نے ہفتے میں دبئی کیلئے 40 پروازیں چلانے کا اعلان کیا ہے۔

اماراتی ائیرلائنز بھی دبئی اسرائیل کیلئے پروازیں چلائیں گی جبکہ سعودی عرب پہلے ہی اماراتی ائیرلائن کو اسرائیل کیلئے فضائی حدود استعمال کرنے کی اجازت دے چکا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں