سندھ میں کورونا وائرس سے چھٹیاں، نجی تعلیمی اداروں نے آن لائن کلاسز کا آغاز کردیا

چین سے پھیلنے والے کورونا وائرس نے اب پاکستان میں بھی اپنے پنجے گاڑنا شروع کر دیے ہیں. اور احتیاطی تدابیر کے پیش نظر سندھ کے تمام تعلیمی اداروں کو 13 مارچ تک چھٹیاں دی گئی ہیں. جس کی وجہ سے تعلیم کا حرج ہونا تھا. لہذا اس مسئلے کو پیش نظر رکھتے ہوئے کہ بچوں کا سال ضائع نہ ہو اور نہ ہی ان کی پڑھائی کا حرج ہو. کیمبرج ایجوکیشن سسٹم سے منسلک کراچی کے نجی کالجز نے آن لائن کلاسز کا آغاز کردیا۔
کراچی میں آن لائن کلاسز کے لیے اے لیول کے کالجز سیڈر، نکسر اور لائسیم نے پہل کی ہے، تعلیمی اداروں نے طلبہ کو اینڈرائیڈ، ایپل موبائل فونز، آئی پیڈز، لیپ ٹاپس اور کمپیوٹر پر آن لائن کلاسز کی سہولت فراہم کی ہے. جس کے لیے ‘زوم’ نامی ایک ایپ متعارف کروایا گیا ہے. جس کے ذریعے
طلبہ گھر بیٹھ کر لائیو اپنی ٹیچر سے اپنے ہی کلاس روم میں لیکچر میں شرکت کرتے ہیں، ہر طالب علم کو اس کے اسکول اور کلاس کا کوڈ فراہم کیا گیا ہے۔
ایپ میں لاگ ان ہونے کے لیے مطلوبہ خانہ پر کرکے پاس ورڈ یا کوڈ انٹر کرنے سے طالب علم کلاس کے مقررہ وقت پر ٹیچر سے آن لائن ہو جاتا ہے، طالب علم اپنی ڈیوائس کا مائیک اور کیمرہ بند کرکے کلاس میں شرکت کر سکتا ہے. تاکہ لیکچر کے دوران کسی بھی شور سے بچا جا سکے. لیکچر کے دوران ٹیچر اسکرین پر طلبہ کو سمجھا بھی رہا ہوتا ہے۔
دوران لیکچر اگر کسی طالب علم کو کوئی سوال پوچھنا ہو تو ’ریز یور ہینڈ‘ کے آپشن میں جاکر تحریری طور پر لکھ سکتا ہے، یہی نہیں متعلقہ لیکچر سے متعلق ٹیچنگ میٹیریل اور نوٹس طالبعلم کو ای میل کیے جاتے ہیں۔
آن لائن لیکچر کے دوران طالب علم کی حاضری بھی مانیٹر کی جاتی ہے، موڈریٹرز اس دوران کلاس میں موجود ہوتے ہیں جو آن لائن اٹینڈنس چیک کرتے ہیں۔
والدین کی جانب سے تعلمی اداروں کے اس اقدام کو سراہا جا رہا ہے. اور وہ خوش ہیں کہ اس طرح بچوں کی پڑھائی کا حرج نہیں ہو گا. اور وہ گھر بیٹھے ہی تعلیم حاصل کر سکیں گے

اپنا تبصرہ بھیجیں