کیا تعلیمی اداروں میں سردیوں کی چھٹیاں ہوں ‌گی ؟

وفاقی وزیرتعلیم شفقت محمود بین الصوبائی وزرائے تعلیم اجلاس میں ملک میں تعلیمی اداروں کو بند نہ کرنے کا فیصلہ کرتے ہوئے موسم سرما کی کم سے کم تعطیلات یا تعطیلات نہ ہونے پر اتفاق کیا گیا‌۔
تفصیلات کے مطابق وزیرتعلیم شفقت محمود کی زیرصدارت بین الصوبائی وزرائےتعلیم کا اجلاس ہوا، جس میں وزارت صحت کے حکام نے کوروناصورتحال پر بریفنگ دی۔ اجلاس میں شرکا نے اتفاق کیا کہ موجودہ صورتحال میں تعلیمی ادارےبندکرنےکی ضرورت نہیں، تعلیمی ادارے کھلےرہیں گے تاہم تعلیمی اداروں میں ہرصورت ایس اوپیز پر عملدرآمد کرایاجائے گا تاکہ کسی بھی خطرناک صورتحال سے بچوں کو محفوظ رکھا جا سکے
اجلاس میں صوبوں نے موسم سرما کی کم سے کم تعطیلات یا تعطیلات نہ ہونے پر اتفاق کیا اور فیصلہ کیا گیا کہ پنجاب میں موسم سرما کی تعطیلات نہیں ہوں گی ، موسم سرما کی کم سے کم تعطیلات کرنے یا کم بھی نہ ہونے کا فیصلہ صوبوں پر منحصر ہوگا۔
ذرائع کا کہنا ہے کہ اپریل سےاگست تک کےتعلیمی سال ، آٹھویں،نویں ،دسویں کےبورڈ امتحانات پربھی کوئی فیصلہ نہ ہو سکا،بین الصوبائی وزرائےتعلیم کا اگلا اجلاس دسمبر میں ہوگا۔
وفاقی وزیر تعلیم کا کہنا تھا کہ وزارت صحت کی ایڈوائزری کے تحت حالات پر نظر رکھنا ہے، پہلے بھی ہم نے کوویڈ19 کا مقابلہ کیا مستقبل میں بھی کرلیں گے۔
بعد ازاں کورونا کے بڑھتے ہوئے کیسز کے پیش نظر پنجاب کے تعلیمی اداروں میں سردیوں کی چھٹیوں سےمتعلق مشاورت کی گئی، جس میں تعلیمی اداروں میں سردیوں کی چھٹیاں نومبرکےدوسرےہفتےمیں دینے پرغور کیا جارہا ہے ، وزیراعلیٰ پنجاب تعلیمی اداروں میں چھٹیوں سے متعلق فیصلہ آئندہ 2 روزمیں کریں گے۔
وفاق نے صوبے میں تعلیمی ادارے دسمبر کے بجائے نومبر میں بند کرنے کی سفارش کی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں