ٹک ٹاک کا جنون ایک اور جان لے گیا

پنجاب کے ضلع ٹوبہ ٹیک سنگھ میں ٹک ٹاک ویڈیو بنانے کے دوران اتفاقیہ گولی چلنے سے جواں عمر لڑکی جاں بحق ہوگئی۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب کے ضلعی صدر مقام ٹوبہ ٹیک سندھ کی تحصیل کمالیہ کے علاقے خورشید آباد میں بائیس سالہ نوجوان لڑکی ہاتھ میں پستول تھامے ٹک ٹاک پر ویڈیو بنا رہی تھی کہ اسی دوران گولی چل گئی۔ ویڈیو بنانے کے دوران گولی چلنے سے لڑکی جائے وقوعہ پر ہی دم توڑ گئی۔ لڑکی کی عمر 22 سال تھی

پاکستان میں ٹک ٹاک کے صارفین کی تعداد لاکھوں میں ہے جو دوسروں کو متاثر کرنے کے لیے خطرناک ویڈیو بنا کر اُسے اپنی آئی ڈی سے ٹک ٹاک پر اپ لوڈ کرتے ہیں۔ اور لوگوں سے لائکس اور کمنٹ کرواتے ہیں
یہ معاملہ صرف پاکستان میں نہیں بلکہ دنیا کے دوسرے ممالک میں بھی جاری ہے . ٹک ٹاک کے لیے سیکڑوں نوجوان خطرناک ویڈیوز بنانے کے چکر میں اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں۔

رواں سال میں اب تک صرف پاکستان میں ٹک ٹاک ویڈیوز بنانے کے دوران 10 سے زائد نوجوانوں کی اموات ہوئیں، جن میں سے متعدد واقعات پستول ہاتھ میں لے کر ویڈیو ریکارڈ کرنے کے دوران پیش آئے جبکہ نہر ، دریا یا سمندر میں تیراکی کرنے کے چکر میں بھی نوجوان اپنی قیمتی جانوں کا خاتمہ کرچکے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں