وزیر اعظم کیا آپ کے پاس مظلوموں کے سر پر ہاتھ رکھنے کا وقت نہیں؟‌ مریم نواز

مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز نے وزیراعظم عمران خان پر تنقید کرتےہوئے کہا ہےکہ آپ کے پاس ترکش ڈرامہ دیکھنے کا وقت ہے مگر مظلوموں کے سر پر ہاتھ رکھنے کا نہیں۔
مریم نواز نے وزیراعظم عمران کے سانحہ مچھ سے متعلق مؤقف پر رد عمل دیتے ہوئے کہا کہ یہ بے حسی کی انتہا ہے،آپ پر 22کروڑ عوام کی ذمہ داری ہے، لوگوں کی آہ وبکا کو بلیک میلنگ کہیں گے تو اس پر آپ کو شرم آنی چاہیے
انہوں نے کہا کہ وہ اپنے لوگوں کی لاشیں آگے رکھ کر بیٹھے ہوئے ہیں، کیا ان کی لاشوں سے آپ کی انا بڑی ہے، وہ کہہ رہے ہیں آپ آجائیں،ان کےسروں پر ہاتھ رکھ دیں، وہ کہہ رہے ہیں انہیں کچھ یقین دہانیاں کرادیں، ہم لاشوں کو دفنادیں گے اور اس کو آپ بلیک میلنگ کہہ رہےہیں، یہ آپ کا فرض ہے،یہ آپ کو کرنا پڑےگا۔
لیگی رہنما کا کہنا تھا کہ آپ کے پاس ترکش ڈرامہ دیکھنے اور ایکٹر سے ملنےکا وقت ہے، آپ کے پاس کتوں سے کھیلنےکا وقت ہے مگر مظلوم لوگوں کے سرپر ہاتھ رکھنےکا وقت نہیں۔
جبکہ دوسری جانب وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہےکہ ہزارہ برادری آج تدفین کریں آج ہی کوئٹہ چلا جاؤں گا لیکن وزیراعظم کی آمد سے تدفین کو مشروط کرنا مناسب نہیں۔
اسلام آباد میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نےکہا کہ ہمارے ملک میں شاید ہزارہ برادری پر سب سے زیادہ ظلم ہوا اور مجھے سب سے زیادہ پتا ہے کہ ان کے ساتھ کیسا ظلم ہوا
عمران خان نے کہا کہ مچھ واقعے کے بعد وزیر داخلہ کو کوئٹہ بھیجا، پھر دو وفاقی وزرا کو بھیجا، ہزارہ کمیونٹی کو یہ بتانے کے لیے بھیجا کہ یہ حکومت ان کے ساتھ ہے۔
وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ہم مظاہرین کے تمام مطالبات مان چکےہیں لیکن ان کا ایک مطالبہ ہے کہ وزیرعظم آئے تو شہدا کو دفنائیں گے، ان کو کہا ہےکہ کسی بھی ملک کے وزیراعظم کو ایسے بلیک میل نہیں کیا جاسکتا، اس طرح ہر کوئی بلیک میل کرے گا، خاص طور پر ڈاکوؤں کا ایک ٹولہ ڈھائی سال سے کرپشن کیسز معاف کرنے کے لیے بلیک میل کررہا ہے۔
عمران خان نے مزید کہا کہ دھرنے کے شرکا اگر آج تدفین کردیں تو آج ہی کوئٹہ آجاؤں گا، ہم نے سارے مطالبات مان لیے لیکن یہ نہیں کرسکتے کہ شرط لگائیں، پہلے دفنائیں، اگر آج دفناتے ہیں تو گارنٹی دیتا ہوں آج کوئٹہ آؤں گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں