خواتین کا عالمی دن، 8 مارچ دنیا بھر میں آج منایا جا رہا ہے

پوری دنیا کی طرح آج پاکستان میں بھی خواتین کا عالمی دن منایا جارہا ہے. جس کا مقصد معاشرے کی عورت کو عزت اور تحفظ دینا ہے . اس کے علاوہ اس دن کا خاص مقصد معاشرے کی خواتین کی سماجی، سیاسی اور اقتصادی جدوجہد کو خراج تحسین پیش کرنا ہے .اس دن کے منانے کا مقصد عورت کو اس بات کا یقین دلانا ہے. کہ یہ معاشرہ عورت کے بغیر نامکمل ہے. عورت کی شمولیت کے بغیر کوئی بھی معاشرہ نہ ترقی کر سکتا ہے اور نہ ہی چل سکتا ہے. 8 مارچ کو نہ صرف خواتین کو خراج تحسین پیش کیا جاتا ہے. بلکہ اس حوالے سے مختلف تقاریب اور واکس کا اہتمام بھی کیا جاتا ہے. اور عورت ذات کی زندگی کے ہر شعبے میں کی جانے والی خدمات کو سراہا جاتا ہے

پاکستان میں بھی اس حوالے سے تقاریب منعقد کی جاتی ہیں ، سول سوسائٹی کی تنظمیں خواتین کو درپیش مسائل اور چیلنجوں کو اجاگر کرنے کیلئے واکس، سیمینارز اور مباحثوں کا بھی اہتمام کرتی ہیں. جس میں خواتین کی کثیر تعداد شریک ہوتی ہے. گھر ہو یا دفتر، اسپتال ہو یا میدان جنگ ہر شعبے میں خواتین نے اپنی صلاحیتوں کو منوایا ہے، خواتین کے عالمی دن کو منائے جانے کا مقصد صنفی امتیاز کے خاتمے اور خواتین کے مساوی حقوق کے لیے کوششوں کی اہمیت اجاگر کرنا ہے۔

خواتین کے عالمی دن کے موقع پر دنیا کے مختلف ممالک جن میں روس، ویت نام، چین اور بلغاریہ میں خواتین کے عالمی دن پر عام تعطیل ہوتی ہے، یہ دن خواتین کی ’’جدوجہد‘‘ کی علامت ہے۔

آج سے تقریباً سو سال قبل نیو یارک میں کپڑا بنانے والی ایک فیکٹری میں مسلسل دس گھنٹے کام کرنے والی خواتین نے اپنے کام کے اوقات کار میں کمی اور اجرت میں اضافے کیلئے آواز اٹھائی تو ان پر پولیس نے نہ صرف وحشیانہ تشدد کیا بلکہ ان خواتین کو گھوڑوں سے باندھ کر سڑکوں پرگھسیٹا گیا تاہم اس تشدد کے بعد بھی خواتین نے جبری مشقت کے خلاف تحریک جاری رکھی۔

خواتین کی مسلسل جدوجہد اور لازوال قربانیوں کے نتیجے میں 1910 میں کوپن ہیگن میں خواتین کی پہلی عالمی کانفرنس منعقد ہوئی، جس میں 17 سے زائد ممالک کی سو کے قریب خواتین نے شرکت کی۔

اس کانفرنس میں عورتوں پر ہونے والے ظلم واستحصال کا عالمی دن منانے کا فیصلہ کیا گیا۔ اقوام متحدہ نے 1656 میں 8 مارچ کو عورتوں کے عالمی دن کے طور پر منانے کا فیصلہ کیا۔ جبکہ پہلی بار عورتوں کا قومی دن 28فروری کو منایا گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں