کورونا وائرس سے متاثرہ ملک جنوبی کوریا سے آنے والے شخص کے پاکستان ائیرپورٹ پر اسکریننگ کے انتظامات پر انکشاف

کورونا وائرس سے متاثرہ ملک جنوبی کوریا سے پاکستان واپس پہنچنے والے ایک شخص نے پاکستان کے کراچی ایئرپورٹ پر اسکریننگ اور دیگر انتظامات کے حوالے سے انکشاف کیا ہے اور کہا کہ ان سے ایئرپورٹ پر کسی نے نہ بخار، نزلہ یا کھانسی کا کسی نے نہیں پوچھا اور نہ چیک کیا
جنوبی کوریا سے واپس آنے والے شخص نے بتایا کہ مجھے طیارے میں 3 فارم دیے گئے تھے جس میں اپنی پوری معلومات لکھی، طیارے سے اترنے کے بعد ایک کاؤنٹرپر مجھ سے 2 فارم لیے گئے۔
انہوں نے بتایا کہ مجھ سے کہی بھی کسی بھی کاؤنٹر پر کسی نے بخار وغیرہ کا کچھ نہیں پوچھا نہ کسی نے چیک کیا جس کے بعد وفاقی تحقیقاتی ایجنسی (ایف آئی اے) نے پاسپورٹ لیا اور پھر میں باہر آگیا۔
انہوں نے کہا کہ کسی نے کوئی چیکنگ نہیں کی نہ پوچھا کہ مجھے بخار، نزلہ یا کھانسی تو نہیں ہے بلکہ تیسرا فارم تک مجھ سے نہیں لیا گیا اور وہ فارم میں گھر لے کر آگیا۔
متعلقہ شخص نے حکومت کے سارے دعووں کا راز فاش کر دیا ہے. جو یہ کہہ رہے ہیں کہ ائیر پورٹ پر سخت سیکورٹی ہے. اسکریننگ کے موثر ترین اقدامات بھی ہیں. لیکن ایسا کچھ نہیں ہے. جو کہ قابل تشویش اور قابل افسوس ہے
دوسری جانب مانچسٹر سے لاہور پہنچنے والے مسافر محمد ولید نے بھی بتایا کہ وطن واپسی پر ائیرپورٹ پر ان کا کوئی طبی معائنہ نہیں کیا گیا۔
انہوں نے کہا کہ ائیرپورٹ پر نہ کارڈ دیے گئے اور نہ ہی کچھ معلوم کیا گیا، پرواز پر موجود کسی ایک بھی مسافر کا طبی معائنہ نہیں کیا گیا۔
ملک میں اب تک کورونا وائرس کے 19 کیسز سامنے آچکے ہیں جن میں سے سندھ میں 15 (14 کراچی، ایک حیدرآباد) ، اسلام آباد میں 2 اور ایک گلگت و بلتستان میں رپورٹ ہوا۔
چین نے کورونا وائرس کی مزید 12 ہزار تشخیصی کِٹس پاکستان بھجوادیا ہیں
جنوبی کوریا میں مہلک وائرس سے اب تک 54 افراد ہلاک ہوچکے ہیں اور 7513 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔
کورونا وائرس سے چین میں اب تک 3136 افراد ہلاک ہوچکے ہیں جبکہ ہزاروں افراد مہلک وائرس سے متاثر ہیں۔
چین کے علاوہ اٹلی، ایران اور جنوبی کوریا سمیت متعدد ممالک میں 949 افراد ہلاک ہوچکے ہیں جبکہ سیکڑوں افراد متاثر ہیں. یہ وائرس اب تک 106 ممالک تک پھیل چکا ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں