ترجمان سندھ حکومت مرتضٰی وہاب کی پریس کانفرنس، کورونا کے بڑھتے کیسز کی ذمہ داری حکومت کے سر ڈال دی

کراچی: سندھ حکومت کے ترجمان مرتضیٰ وہاب نے کراچی میں پریس کانفرنس کی اور ملک میں بڑھتے ہوئے کورونا کیسز کا ذمہ دار حکومت کے سر ڈال دیا
ان کا کہنا تھا کہ کراچی میں ائیرپورٹس پر اسکریننگ سسٹم بنا تو دیا ہے لیکن وہ کام نہیں کر رہا. بیرونی ممالک سے آنے والے افراد کی اسکریننگ ٹھیک طرح سے نہیں ہو رہی. اس لیے کورونا کے کیسز پاکستان میں بھی رپورٹ ہوئے ہیں. حال ہی میں جنوبی کوریا اور سعودی عرب سے آنے والے افراد نے اس بات کی تصدیق کہ ہے کہ ائیر پورٹ پر ان سے کسی نے کچھ نہیں پوچھا اور نہ ہی اسکریننگ کی گئی. جبکہ حکومت اس بات کے بڑے بڑے دعوے کر رہی ہے کہ ائیرپورٹ پر اسکریننگ کا موثر انتظام موجود ہے
انہوں نے الزام لگایا کہ بد قسمتی سے وفاقی حکومت اس حوالے سے اپنی ذمہ داری پوری نہیں کررہی، اس میں بہتری کی گنجائش ہے، وفاقی حکومت سسٹم بہتر بنائے، اگر انہیں ہماری ضرورت ہے تو ہم مدد کرنے کو تیار ہیں۔ کورونا کے تمام مریض کراچی ائیر پورٹ سے ہی داخل ہوئے ہیں. اگر وہاں کا اسکریننگ نظام موثر ہوتا تو وائرس پاکستان میں نہ آتا. جب سے سندھ میں کورونا کے کیسز رپورٹ ہو رہے ہیں. تب سے ہی وزیر اعلیٰ متحرک ہیں. لیکن وفاقی حکومت ایسا کچھ نہیں کر رہی. جس طرح ان حالات میں وفاق اور صوبے میں رابطے ہونے چاہئیں ویسا کچھ بھی نہیں ہے

ترجمان سندھ حکومت نے مزید کہا کہ ائیرپورٹس ہماری ذمہ داری نہیں لیکن اس مشکل وقت میں ہم سب کو ہی آگے آنا چاہیے اور اپنا اپنا کردار ادا کرنا چاہیے
مرتضیٰ وہاب نے کہا کہ کل وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا اس میں کورونا سے متعلق کوئی بریفنگ نہیں ہوئی، وفاقی حکومت کورونا وائرس کے معاملے پر خاموش ہے اسے سنجیدگی کا مظاہرہ کرنا چاہیے۔

ان کا کہنا تھا کہ کوئٹہ کا کیس بھی تفتان بارڈر کی مانیٹرنگ پر سوالیہ نشان ہے، جس بچے میں وائرس کی تصدیق ہوئی اسے ٹیسٹ کے لیے کوئٹہ لایا گیا یعنی اس کے قرنطینہ کو توڑا گیا ہے۔

کراچی میں تعلیمی اداروں کی تعطیلات کے حوالے سے مرتضیٰ وہاب نے کہا کہ آئندہ آنے والے روز میں اسکولوں اور کالجز کے حوالے سے فیصلہ کریں گے اور جو عوامی مفاد میں ہوگا وہی فیصلہ کریں گے، تکلیف کی اس گھڑی میں حکومت عوام کے ساتھ ہے۔

انہوں نے بتایا کہ اس وقت خوف و ہراس کی کوئی صورتحال نہیں، تمام صورتحال کنٹرول میں ہے بس عوامی تعاون کی ضرورت ہے۔
ماہرین کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس سے ہونے والی بیماری انفلوئنزا یا فلو جیسی ہی ہے اور اس سے ابھی تک اموات کافی حد تک کم ہیں۔

کورونا وائرس کے حوالے سے ماہرین نے عوام کو مشورہ دیا ہے کہ سب اپنے ہاتھوں کو بار بار صابن سے دھوئے اور ماسک کا استعمال کریں. زیادہ رش والی جگہ جانے سے گریز کریں اور بیماری کی صورت میں ڈاکٹر کے مشورے سے ادویات استعمال کرنی چاہیئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں