کراچی میں عدالتی حکم پر عمل شروع، صدر کی موبائل مارکیٹ سے بل بورڈ ہٹادیے گئے

عدالتی حکم پر اینٹی انکروچمنٹ نے بل بورڈز ہٹانے کے لیے کارروائیاں تیز کردی ہیں۔
کراچی کے علاقے صدر کی موبائل مارکیٹ میں اینٹی انکروچمنٹ نے بل بورڈز ہٹانے کے لیے کرین کی مدد سے آپریشن کیا اس دوران بل بورڈ کا فریم کاٹنے کے لیے گیس ویلڈنگ کی گئی تو اچانک عمارت میں آگ لگ گئی جس سے عمارت کی دوسری منزل پر قائم دفتر میں سامان جل گیا۔
الیکٹرونکس ڈیلر ایسوسی ایشن کے چیئرمین گلفام منہاج نے دعویٰ کیا ہے کہ آگ سے دفتر میں رکھا 40 فیصد سامان جل گیا۔
اسسٹنٹ کمشنر صدر آصف راجا نے بتایا کہ بل بورڈ سے اشتہارات ہی نہیں ساتھ میں بل بورڈ کے فریم بھی ہٹائے جائیں گے۔
ڈائریکٹر اینٹی انکروچمنٹ بشیر صدیقی کا کہنا ہے کہ آپریشن کے لیے ڈی ایم سی ساؤتھ سے مشینری آئی تھی جو عمارت میں آگ لگنے کے واقعے کے بعد چلی گئی، غیر قانونی بل بورڈ لگانے والوں کے خلاف مقدمہ ہوگا یا نہیں اس کا فیصلہ کمشنر کراچی کریں گے۔
سپریم کورٹ نے گزشتہ روز سماعت کے دوران شہر بھر میں بل بورڈ اور سائین بورڈ فوری ہٹانے کا حکم دیا اور کمشنر کراچی کو اس سلسلے میں مکمل اختیار دیا ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ انہوں‌نے سخت اظہار برہمی بھی کیا تھا .اور کہا تھا کہ کراچی کا کوئی بھی خیر خؤاہ نہیں ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں