پاکستان اسٹاک ایکسچینج بھی وائرس کی زد میں آ گئی، کاروبار بری طرح متاثر

کورونا وائرس نے جہاں زندگی کے تمام معاملات زندگی کو بری طرح متاثر کیا ہے. وہی اس وائرس سے پاکستان اسٹاک ایکسچینج بھی بری طرح متاثر ہوئی ہے. اور کاروبار میں مندی کا رجحان برقرار ہے
پاکستان اسٹاک ایکسچینج کی طرح دنیا بھر کی اسٹاک مارکیٹ میں مندی نظر آ رہی ہے. اور اس ہفتے کے آغاز سے ہی کاروبار میں مندی ہے. آج دوسری دفعہ پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں حصص کا لین دین 45 منٹ کے لیے روکا گیا۔

پاکستان میں عموماً 100 انڈکس کو فالو کیا جاتا ہے لیکن اگر 30 انڈکس میں 4 فی صد گراوٹ ہو اور وہ مسلسل 5 منٹ تک برقرار رہے تو حصص کا لین دین 45 منٹ کے لیے روک دیا جاتا ہے جب کہ کے ایس ای 30 انڈکس میں 4 فی صد سے زائد گراوٹ دیکھی گئی
اسٹاک ایکسچینج 100 انڈیکس 1284 پوائنٹس کمی سے 36388 پر ٹریڈ کر رہا ہے جب کہ کے ایس ای 30 انڈیکس 4 اعشاریہ 36 فی صد کمی کے بعد 16 ہزار 220 پوائنٹس پر ہے۔

امریکا کے صدر ٹرمپ کی جانب سے یورپی پروازوں پر پابندی کے اعلان کے ساتھ ہی عالمی منڈیوں میں منفی رجحان دیکھا گیا۔

بھارتی اسٹاک میں شدید مندی کا رجحان رہا اور مارکیٹ 2700 پوائنٹس گر گئی اور بھارتی روپے کی قدر بھی ایک فی صد کم ہو گئی۔

امریکی اسٹاک مارکیٹس میں بھی مندی کا رجحان برقرار رہا جب کہ جاپانی اسٹاک مارکیٹ میں 3 اعشاریہ 3 فی صد کمی ہوئی۔
ہانگ کانگ اسٹاک مارکیٹ میں 3 اعشاریہ 8 فی صد اور سنگاپور میں 3 اعشاریہ 9 فی صد کمی دیکھنے میں آئی۔
اس کمی کی بنیادی وجہ کورونا وائرس ہی ہے. جس سے کاروبار متاثر ہو رہے ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں