نیب آفس کے باہر ہنگامہ آرائی، مریم نواز اور دیگر 300 افراد کے خلاف مقدمہ درج

لاہور: نیب آفس کے باہر ہنگامہ آرائی پر مریم نواز اور ان کے شوہر کیپٹن (ر) صفدر پر مقدمہ درج کرلیا گیا۔
پولیس کے مطابق گزشتہ روز نیب لاہور کے دفتر کے باہر پیش آنے والے واقعے پر نیب حکام نے لیگی رہنماؤں کے خلاف مقدمے کی درخواست دی تھی جس پر تھانہ چوہنگ میں مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔
پولیس کا بتانا ہےکہ مقدمے میں مریم نواز، ان کے شوہر محمد صفدر سمیت رانا ثنا اللہ، پرویز رشید، زبیر محمود، جاوید لطیف، دانیال عزیز اور پرویز ملک کو بھی ایف آئی آر میں نامزد کیا گیا ہے۔
پولیس کے مطابق مقدمے میں 300 نامعلوم افراد سمیت 188 لیگی رہنماؤں اور کارکنان کو بھی نامزد کیا گیا ہے جب کہ مقدمے میں کار سرکار میں مداخلت اور پولیس اہلکاروں پر تشدد کی دفعات شامل کی گئی ہیں۔
ایف آئی آر میں بتایا گیا ہےکہ گزشتہ روز کے واقعے میں پتھراؤ کے دوران 13 پولیس اہلکار بھی زخمی ہوئے۔
پولیس کی جانب سے لیگی کارکنوں کومنتشر کرنے کیلئے نیب آفس کے باہر واٹر کینن بھی طلب کی تھی، لیگی کارکنان گاڑی ایل ای 3378میں پتھر سےبھرے شاپرلیکرآئے تھے ، لیگی کارکنوں نے گاڑی کےاندر سے پتھر نکال کر پولیس پر برسائے تھے۔
لیگی کارکنوں کے پتھراؤ کے باعث نیب دفتر پرکھڑیوں کے شیشےٹوٹ گئے جبکہ لیگی کارکنان نے نیب دفتر کے باہر بیریئر بھی توڑنےکی کوشش کی تھی۔
گزشتہ روز نیب نے مریم نواز کو اراضی کیس کے سلسلے میں طلب کیا تھا اور ان کی پیشی کے موقع پر ن لیگی کارکنان کی بڑی تعداد بھی نیب دفتر کے باہر پہنچی جہاں پولیس اور لیگی کارکنان کے درمیان تصادم سے علاقہ میدان جنگ بن گیا جب کہ اس دوران پتھراؤ سے مریم نواز کی گاڑی شیشہ بھی ٹوٹ گیا تھا. ان حآلات کے پیش نظر مریم نواز اپنا بیان ریکارڈ نہ کرواسکی

اپنا تبصرہ بھیجیں