جنگ اور جیو گروپ کے بانی میر شکیل الرحمان نیب کی گرفت میں

لاہور: نیب نے غیر قانونی اراضی کیس میں جنگ وجیو گروپ کے مالک میر شکیل الرحمان کو گرفتارکر لیا۔ میر شکیل الرحمان پر 1986 میں اس وقت کے وزیراعلی نوازشریف سے 54 کنال اراضی سیاسی بنیادوں پر لینے کا الزام ہے جس کی تحقیقات کے لیے انہیں لاہور نیب میں طلب کیا گیا۔ قومی احتساب بیورو (نیب) نے 34 برس قبل مبینہ طور پر حکومتی عہدے دار سے غیرقانونی طور پر جائیداد خریدنے کے کیس میں جنگ گروپ کے ایڈیٹر انچیف میر شکیل الرحمان کوحراست میں لے لیا ہے۔
میر شکیل الرحمان نے یہ پراپرٹی پرائیوٹ افراد سے خریدی تھی، میر شکیل الرحمان اس کیس کے سلسلے میں دو بار خود نیب لاہور کے دفتر میں پیش ہوئے، دوسری پیشی پر میر شکیل الرحمان کو جواب دینے کے باوجود گرفتار کر لیا گیا
ترجمان جنگ گروپ کے مطابق یہ پراپرٹی 34 برس قبل خریدی گئی تھی جس کے تمام شواہد نیب کو فراہم کردیے گئے تھے جن میں ٹیکسز اور ڈیوٹیز کے قانونی تقاضے پورے کرنے کی دستاویز بھی شامل ہیں۔

دوسری جانب قومی احتساب بیورو (نیب) کے ترجمان نے کہا ہے کہ نیب پر جنگ گروپ کے الزامات من گھڑت اور بے بنیاد ہیں، وہ جھوٹے اور حقائق کے منافی الزامات کو مسترد کرتے ہیں۔
ترجمان نے کہا کہ نیب ہمیشہ آئین وقانون کے مطابق فرائض انجام دینے پر یقین رکھتا ہے، نیب دباؤ، دھمکی، پروپیگنڈے کی پروا کیے بغیر بدعنوان عناصر کے خلاف فرائض انجام دیتا رہے گا۔

ترجمان نے مزید کہا کہ میر شکیل الرحمان کو آج احتساب عدالت میں ریمانڈ کیلئے پیش کیا جائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں