کورونا وائرس کی وجہ سے ماؤنٹ ایورسٹ بھی بند

کھٹمنڈو: نیپال نے کورونا وائرس کے خدشے کے پیش نظر دنیا کی بلند ترین چوٹی ماؤنٹ ایورسٹ کو بھی بند کر دیا ہے. نیپال میں کورونا وائرس کے ایک کیس کی تصدیق ہوئی ہے جس کے بعد حکومت نے حفاظتی انتظامات بڑھا دیئے ہیں اور اپنے بھارت کے ساتھ ملنے والی سرحد کو بند کر دیا ہے
حکومت نے عوام سے شادی بیاہ سمیت دیگر تقریبات اور عوامی اجتماعات کو منسوخ کرنے کی بھی اپیل کی ہے
برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق نیپالی حکومت نے ماؤنٹ ایورسٹ پر مہم جوئی کے اجازت ناموں کو 14 مارچ سے 30 اپریل تک معطل کردیا ہے جب کہ چین نے پہلے ہی اپنے علاقے سے ماؤنٹ ایورسٹ کو بند کررکھا ہے۔
نیپالی وزیراعظم ہاؤس کی جانب سے جاری بیان میں بھی ماؤنٹ ایورسٹ کو 30 اپریل تک بند کیے جانے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا گیا ہےکہ 2020 کے سیزن کے لیے پہلے سے جاری کیے گئے اور آئندہ جاری ہونے والے تمام اجازت نامے منسوخ کردیے گئے ہیں۔
اس کے علاوہ نیپالی حکومت نے سیاحوں کو ہدایت جاری کی ہےکہ 14 مارچ سے ملک میں آنے والے سیاح 14 روز کا قرنطینہ اختیار کریں۔
امریکا، بھارت، چین، برطانیہ، جاپان اور جنوبی کوریا سے زیادہ تر مہم جو ماؤنٹ ایورسٹ پر مہم جوئی کے لیے آتے ہیں جب کہ یہ حکومت کے ریونیو کا ایک بڑا ذریعہ ہے۔
نیپال کے مقامی میڈیا کی رپورٹس میں بتایا گیا ہےکہ نیپالی سیاحت کے شعبے میں ماؤنٹ ایورسٹ پر مہم جوئی سے سالانہ 4 ملین ڈالرز کی آمدن ہوتی ہے۔
ماؤنٹ ایورسٹ پر مہم جوئی کے لیے جانے والی سیاحوں کو حکومت کی اجازت کے ساتھ 11 ہزار امریکی ڈالرز بھی ادا کرنا ہوتے ہیں جس میں ٹرانسپورٹیشن کمپنیوں کی فیس شامل نہیں ہوتی۔ جو کہ اب کورونا وائرس کی وجہ سے منسوخ کر دی گئی ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں