چترال کے علاقے یار خون لشست میں گلیشئر پھٹنے سے سیلاب، مکانات تباہ، لڑکی جان بحق

چترال کے علاقے یار خون لشست میں گلیشئر پھٹنے سے سیلاب آگیا، جس میں کئی مکانات بہہ گئے اور ایک لڑکی ڈوب پر جاں بحق ہو گئی۔
اطلاعات کے مطابق گلیشر پھٹنے سے ندی نالوں میں طغیانی آ گئی ہے
ڈی سی اپر چترال شاہ سعود کا کہنا ہے کہ سیلابی ریلے میں بہہ کر ایک 12 سالہ لڑکی جاں بحق ہوئی جس کی لاش نکال لی گئی ہے جب کہ کئی مکانات بھی سیلابی ریلے میں بہہ گئے ہیں۔

شاہ سعود نے بتایا کہ یار خون اور برغیل پاس روڈ آمدورفت کے لئے بند ہے جب کہ متاثرہ علاقے میں امدادی سرگرمیاں شروع کر دی گی ہیں۔
ڈی سی اپر چترال کے مطابق گلیشئر پھٹنے سے جمعہ کی صبح سیلاب آیا تھا لیکن شام تک پانی میں کمی آگئی تھی، اب صورتحال نارمل ہو گئی ہے۔
انہوں نے بتایا کہ سیلابی ریلے سے 15 سے زائد گھر متاثر ہوئے، متاثرین کے لیے 60 خیمے لگائے ہیں۔
شاہ سعود کے مطابق جولائی اور اگست میں بارشوں اور گرمی سے گلیشیئر پگھلتے ہیں جس کی وجہ سے سیلابی صورت حال پیدا ہو جاتی ہے۔

دوسری جانب ڈائریکٹر لیڈی ریڈنگ اسپتال پشاور کا کہنا ہے کہ چترال میں گزشتہ روز چھت گرنے سے زخمی 13 افراد کو اسپتال لایا گیا جس میں سے 4 زخمیوں کی حالت تشویشناک ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں