آصف علی زرداری توشہ خانہ ریفرنس میں احتساب عدالت پیش ہو گئے

سابق صدر آصف علی زرداری توشہ خانہ ریفرنس میں ذاتی حیثیت میں عدالت میں پیش ہوئے. اسلام آباد کی احتساب عدالت نے توشہ خانہ ریفرنس میں آصف زرداری کو ذاتی حیثیت میں طلب کیا تھا جس کے لیے وہ اسلام آباد پہنچے۔

سماعت کے آغاز پر عدالتی عملے نے آصف زرداری کی طلبی کے لیے ان کے وکیل فاروق ایچ نائیک کو ہدایت دی جس پر فاروق نائیک نے سابق صدر کو فون کرکے عدالت میں پیش ہونے کا کہا۔
سابق صدر کورونا سے بچاؤ کے لیے این 95 ماسک اور فیس شیلڈ لگا کر عدالت میں پیش ہوئے اور جیسے ہی وہ کمرہ عدالت میں پہنچے تو بلاول بھٹو نے پارٹی ورکرز کو عدالت سے باہر بھیج دیا۔ ان کا کہنا تھا کہ کورونا چل رہا ہے کچھ خیال کریں۔
بلاول کی ہدایت پر راجا پرویز اشرف، مصطفیٰ نواز کھوکھر اور پیپلزپارٹی کے دیگر رہنما کمرہ عدالت سے باہر چلے گئے۔
سماعت کے دوران وکیل صفائی اور نیب کی پراسیکیوشن ٹیم کے درمیان تلخ کلامی بھی ہوئی۔
آصف زرداری کے وکیل فاروق نائیک نے کہا کہ سابق صدر بیمار ہیں، عدالت بھری ہوئی ہے اگر ان کو کورونا ہوگیا تو کون ذمہ دار ہے؟ پہلے عدالت یہ فیصلہ کرے کہ کیا وکلا بغیر رکاوٹ عدالت میں پیش ہو سکتے ہیں؟
اس موقع پر سابق صدر بطور ملزم روسٹرم پر آئے اور ان کی عدالت میں حاضری لگائی گئی۔
ملزمان کو اب عدالت کی جانب سے مچلکے جمع کروانے کی بھئ ہدایت کی گئی ہے . زرداری صاحب کو 20 لاکھ کے مچلکے جبکہ عبدالغنی مجید ،انور مجید کو 10، 01 لاکھ جمع کروانے کا کہا گیا . جبکہ فرد جرم کے لیے 9 ستمبر کی تاریخ‌ مقرر کر دی گئی ہے
قبل ازیں اسلام آباد ایئر پورٹ پہنچنے پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے آصف زرداری نے کہا کہ نیب کیسز سے گھبرانے والے نہیں، ماضی میں بھی مقدمات کا ڈٹ کر سامنا کیا اب بھی کریں گے۔
سابق صدر آصف علی زرداری کا کہنا تھا کہ جنہوں نے جھوٹے مقدمات بنائے انہوں نے منہ کی کھائی، موجودہ مقدمات کا بھی نتیجہ یہی نکلے گا، پیپلزپارٹی کیلئے جیل اور ریل نئی بات نہیں، ہم نے مقدمات سے بھاگ کر ملک نہیں چھوڑا بلکہ ان کا ڈٹ کر مقابلہ کیا۔
آصف زرداری کی اسلام آباد آمد پر سخت ترین انتظامات کیے گئے ہیں، ایک ہزار سے زائد پولیس افسران و جوان سیکیورٹی کے فرائض سرانجام دیے۔
جبکہ نیب آفس کے باہر رکاوٹیں لگادی گئیں، پولیس کی بھاری نفری تعینات کی گئی ہے۔ پولیس نے جی الیون سگنل سے نیب دفتر جانے والا راستہ بند کر دیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں