اپوزیشن این آر او حاصل کرنے اور عوام کو خطرے میں ڈالنے کے لیے کسی بھی حد تک جاسکتی ہے: وزیراعظم

وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ پاکستان اس وقت کرونا جیسی صورت حال کا مقابلہ کررہا ہے لیکن پی ڈی ایم کی قیادت عوام کی زندگی اور تحفظ کا خیال کیے بغیر جلسے کرنا چاہتی ہے، اپوزیشن این آر او حاصل کرنے کے لیے کسی بھی حد تک جاسکتی ہے۔
تفصیلات کے مطابق عمران خان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ٹوئٹ کیا کہ اپوزیشن سمجھتی ہے یہ این آر او کے لیے دباؤ ڈالنے کا آخری ذریعہ ہے جو کبھی نہیں ہوگا، ان قائدین کو عوام سے کوئی ہمدردی نہیں ہے، پی ڈی ایم کے قائدین این آر او حاصل کرنے میں کبھی کامیاب نہیں ہوں گے۔
وزیراعظم نے اپوزیشن کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے اپنی زندگی میں کبھی ایک دن بھی کام نہیں کیا، ان کے “شاہی” طرز زندگی کا انحصار ناجائز اور غیرقانونی دولت پر ہے، ہمارا مقابلہ ایسی سیاسی قیادت سے ہے جو جمہوری جدوجہد سے نہیں گزرے، یہ لوگ عام شہریوں کو درپیش مشکلات سمجھنے سے قاصر ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ پی ڈی ایم کی قیادت نے عوامی بہتری کے لیے کسی بھی اہم کام میں کبھی حصہ نہیں لیا، ان کا واحد اور مایوس کن مقصد خاندانوں کی بدعنوانی اور لوٹی دولت بچانا ہے۔
اپنے ٹوئٹ میں وزیراعظم نے لکھا کہ ہم نے غریبوں اور معیشت کو تباہی سے بچانے کے لیے اسمارٹ لاک ڈاؤن کیا، ان رہنماؤں نے اسمارٹ لاک ڈاؤن کی مخالفت اور مکمل لاک ڈاؤن کا مطالبہ کیا، اب دوبارہ اسمارٹ لاک ڈاؤن کی ضرورت ہے تو یہ جلسے کر رہے ہیں، یہ عوام کی زندگی اور تحفظ کا خیال کیے بغیر جلسے کرنا چاہتے ہیں۔

عمران خان کا مزید کہنا تھا کہ ان قائدین نے قومی دولت لوٹ کر عوام کو مزید غریب بنایا، اپوزیشن کے نام نہاد لیڈرز بڑے محلوں میں شاہانہ زندگی بسر کررہے ہیں، اپوزیشن رہنماؤں کو یہ منصب بھی خاندان سے وراثت میں ملا، این آر او حاصل کرنے کے لیے یہ کسی بھی حد تک جاسکتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں