کورونا کے باعث برطانیہ میں اموات کا سلسلہ جاری

عالمی وبا کورونا کے باعث برطانوی بندرگاہ ڈوور پر شپنگ بحران پیدا ہو گیا اور کنٹینرز کی 32 کلومیٹر طویل قطاریں لگ گئیں۔ سامان سے بھرے کنٹینرز کی طویل قطاروں کے باعث شدید ٹریفک جام ہو گیا جبکہ خوراک اور کرسمس تحائف سے لدے ہزاروں کنٹینرز بھی پھنس گئے۔
کرسمس کے لیے اگست میں کیے گئے آرڈرز کی تاحال ترسیل نہ ہو سکی، تاخیر کے باعث فی کنٹینر لوڈ کی قیمت میں چار گنا اضافہ ہو گیا۔
برطانیہ میں کورونا کے باعث اب تک 19 لاکھ 77 ہزار سے زائد افراد کورونا سے متاثر اور 66 ہزار 541 افراد جان کی بازی ہار چکے ہیں۔
برطانیہ میں کورونا سے مزید 489 افراد ہلاک ہوگئے جس کے بعد اموت کی تعداد 66500 سے تجاوز کرگئی۔
برطانیہ میں 24 گھنٹوں میں مزید 28 ہزار 507 افراد وائرس سے متاثر ہوئے جس کے بعد متاثرین کی تعداد 19 لاکھ 77 ہزار سے زیادہ ہوگئی ہے جب کہ ملک کے بیشتر حصوں میں انفیکشن کی سطح بڑھ گئی ۔
ادھر اطالوی وزیراعظم نے کرسمس سے نئے سال کے آغاز تک ملک گیر لاک ڈاؤن کا اعلان کردیا۔
دوسری جانب کورونا میں مبتلا فرانس کے صدر میکرون نے ویڈیو بیان میں کہا کہ طبیعت میں بہتری ہے لیکن کام کی رفتار کم کردی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں