پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کیئر ڈیپارٹمنٹ

افواہ
کورونا وائرس گرمی کے موسم میں نہیں پھیلتا :
جواب
کورونا وائرس کے پھیلاؤ کا موسمی تبدیلی یا گرمی کے موسم کے ساتھ کوئی تعلق نہیں۔
کورونا سے بچاؤ کے لئے ہاتھ بار بار صابن سے دھوئیں اور کھانستے یا چھینکتےوقت کہنی سے منہ ڈھانپیں
افواہ
گرم پانی سے نہانے یا ہاتھ دھونے سے کورونا وائرس ختم ہو جاتا ہے
جواب
جی نہیں ۔ کورونا وائرس کے خاتمے کا گرم پانی کے استعمال سے کے ساتھ کوئی تعلق نہیں۔
کورونا سے بچاؤ کے لئے ہاتھ بار بار صابن سے دھوئیں اور کھانستے یا چھینکتےوقت کہنی سے منہ ڈھانپیں ۔
افواہ
گرم پانی سے نہانے یا ہاتھ دھونے سے کورونا وائرس ختم ہو جاتا ہے
جواب
جی نہیں مچھر کے کاٹنے سے نہیں بلکہ کورونا وائرس کھانسی یا چھینک کی چھینٹوں سے پھیلتا ہے۔
زیکا اور ملیریا کے پھیلا ،
گی مچھر ڈین ؤ کا باث یں۔۔
کورونا سے بچاؤ کے لئے ہاتھ بار بار صابن سے دھوئیں اور کھانستے یا چھینکتے وقت کہنیسے منہ ڈھانپیں ۔
افواہ

جواب
جی نہیں مچھر کے کاٹنے سے نہیں بلکہ کورونا وائرس کھانسی یا چھینک کی چھینٹوں سے پھیلتا ہے۔
زیکا اور ملیریا کے پھیلا ،
گی مچھر ڈین ؤ کا باث یں۔۔
کورونا سے بچاؤ کے لئے ہاتھ بار بار صابن سے دھوئیں اور کھانستے یا چھینکتے وقت کہنیسے منہ ڈھانپیں ۔ کورونا وائرس مچھر کے کاٹنے سے پھیلتا ہے
افواہ
کورونا وائرس مکھیوں سے پھیلتا ہے
جواب
کورونا وائرس کھانسی یا چھینک کی چھینٹوں سے پھیلتا ہے۔
اگر مکھی مریض کی بلغم یا آلودہ جگہ پر بیٹھ کر دوسری جگہ بیٹھتی ہے تو وائرس کی منتقلیکو رد نہیں کیا جا سکتا۔
کورونا سے بچاؤ کے لئے مریض کی تھوک، بلغم وغیرہ کو احتیاط سے جمع کر کے تلف کریں۔ ہاتھ صابن سے دھوئیں اور کھانستے /چھینکتے وقتمنہ کہنی سے ڈھانپیں
افواہ
ماسک کا استعمال کورونا سے بچاؤ کا مؤثر طریقہ ہے
جواب
ماسک کا استعمال پہننے والے کے منہ اور ناک سےنکلنے والی چھینٹوں کو روکتا ہے۔
کھانسی کے مریض کو چاہیئے کہ ماسک پہنے تاکہ دوسرے اسکے جراثیموں سے محفوظ ریں۔۔
صحت مند افراد کو ماسک پہننا ضروری نہیں۔ کورونا سے بچاؤ کے لئے ہاتھ بار بار صابن سے دھوئیں اور کھانستے یا چھینکتےوقت کہنی سے منہ ڈھانپیں ۔
افواہ
پیاز، ادرک اور لہسن کے استعمال سے کورونا وائرس کا علاج ممکن ہے
جواب
پیاز ، ادرک یا لہسن کے استعمال کے کورونا کے علاج میں افادیت کے کوئی شواہد نہیں۔
گھریلو ٹوٹکے مثلا “شہد، ادرک کا قہوہ، جوشاندہ وغیرہ کا استعمال فلو، گلا درد وغیرہ میں آسودگی کے احساس کےطور پر استعمال کئے جا سکتے یں۔۔
کورونا کے مشتبہ افراد کا طبی معائنہ ہسپتال سے ضرور کروائیں
افواہ
پیاز، ادرک اور لہسن کے استعمال سے کورونا وائرس کا علاج ممکن ہے
جواب
کورونا کے مریض کا علامات کے مطابق ہسپتال میں علاج ممکن ہے۔ تاہم خود علاجی کے لئے کسی دوائی کیسفارش نہیں کی جاتی۔
کورونا کے مشتبہ افراد کا طبی معائنہ ہسپتال سے ضرور کروائیں اور ڈاکٹر کی ہدایات پر عمل کریں۔
افواہ کورونا لا علاج مرض ہے
افواہ
فلو یا نمونیا سے بچاؤ کی ویکسین کورونا سے بچاؤ کے لئے بھی استعمال کی جا سکتی ہے
جواب
جی نہیں۔ فلو یا نمونیا سے بچاؤ کی ویکسین کا ستعمال کورونا سے بچاؤ میں کوئی کردار ادا نہیں کرتی۔ فلو یا نمونیا سے بچاؤ کی ویگکیگسنی کاا ستعمال مناسب طور پر ان بیماریوں سے بچنے کے لئے کرنا چاہیئے۔
کورونا سے بچاؤ کے لیئے ہاتھ صابن سے دھونے کے اصول پر عمل کریں
افواہ
فلو یا نمونیا سے بچاؤ کی ویکسین کورونا سے بچاؤ کے لئے بھی استعمال کی جا سکتی ہے
جواب
جی نہیں۔ فلو یا نمونیا سے بچاؤ کی ویکسین کا ستعمال کورونا سے بچاؤ میں کوئی کردار ادا نہیں کرتی۔ فلو یا نمونیا سے بچاؤ کی ویگکیگسنی کاا ستعمال مناسب طور پر ان بیماریوں سے بچنے کے لئے کرنا چاہیئے۔
افواہ
کورونا کی وبا معیشت کو نقصان پہنچانے کا ڈھونگ ہے
جواب
کورونا وائرس کے وبا عالمی سطح پر تصدیق شدہ ہے ا ور معیگش یگت کو نقصان پہنچانے کے ڈھونگ کے طور پر نہیں لینا چاہیئےکیونکہ اس وباسے انسانی جان کو خطرہ ہے
البتہ کورونا کی وجہ سے عالمی سطح پر کاروبار کودھچکا لگا ہے۔ صنعتی مصنوعات کی در آمد یا بر آمد کے ذریعے کورونا کےجراثیم کی منتقلی کا کوئی شواہد نہ ہے۔ اشیاء کو اٹھاتے، رکھتے وقت مریض سے جراثیم اسکی سطح کو آلودہ کر سکتے یں۔ لہٰذا احتیاط کریں۔
کورونا سے بچاؤ کے لئے ہاتھ بار بار صابن سے دھوئیں اور کھانستے یا چھینکتے وقت کہنی سے منہ ڈھانپیں ۔
افواہ
کورونا کی وبا معیشت کو نقصان پہنچانے کا ڈھونگ ہے
جواب کورونا وائرس کے وبا عالمی سطح پر تصدیق شدہ ہے ا ور معیگش یگت کو نقصان پہنچانے کے ڈھونگ کے طور پر نہیں لینا چاہیئےکیونکہ اس وباسے انسانی جان کو خطرہ ہے
البتہ کورونا کی وجہ سے عالمی سطح پر کاروبار کودھچکا لگا ہے۔ صنعتی مصنوعات کی در آمد یا بر آمد کے ذریعے کورونا کےجراثیم کی منتقلی کا کوئی شواہد نہ ہے۔ اشیاء کو اٹھاتے، رکھتے وقت مریض سے جراثیم اسکی سطح کو آلودہ کر سکتے یں۔ لہٰذا احتیاط کریں۔
افواہ
وضو کورونا وائرس سے بچاؤ میں اہم کردار اد کرتا ہے
جواب
وضو کے دوران ناک کے صفائی نتھنوں میں اٹکےجراثیموں کے صفائی میں کردار ادا کرتی ہے۔
کورونا کے وائرس نظام تنفس کے زیریں حصوں میںبھی موجود ہوتے یں۔ اور ان کا اخراج مریض کے صحت مند ہونے تک جاریرہتا ہے۔ ایسی صورت میں وضو کے دوران ناک کی صفائی کورونا کے پھیلاؤ میں نا کافی ہے۔ مریض کو ماسک استعمال کرنا چاہیئے اور دیگر لوگوں سے ملنے میں احتراز برتنا چاہیئے
کورونا سے بچاؤ کے لئے ہاتھ بار بار صابن سے دھوئیں اور کھانستے یا چھینکتے وقت کہنی سے منہ ڈھانپیں ۔
افواہ
کورونا وائرس کا پھیلاؤ ہوٹلوں، شادی گھروں، سینما گھروں تک محدود ہے۔ گھر کے سطح پر لوگوں کو شادی بیاہ کے فنکشن کے لئے دعوت دی جا سکتی ہے
جواب
کورونا وائرس کے منتقلی کے امکان کسی بھی جگہ پر زیادہ تعداد میں لوگ اکٹھے ہونے پر ہو سکتا ہے۔ لہٰذا احتیاط کا تقاضاہے کہ کسی بھی جگہ پر لوگ اکٹھے نہ ہوں۔ بلا ضرورت بازار یا شاپنگ مال پر بھی نہ جائیں۔
کورونا سے بچاؤ کے لئے ہاتھ بار بار صابن سے دھوئیں اور کھانستے یا چھینکتے وقت کہنی سے منہ ڈھانپیں ۔
افواہ
مسجدوں، درباروں یا مذہبی مناسبت رکھنے والے مقامات پر کورونا وائرس نہیں پھیلتا

جواب
کسی بھی جگہ پر اکٹھے ہونے والے لوگوں میں اگر کسی ایک شخص میں بھی وائرس موجود ہو تو وہ لاعلمی میں دوسرے لوگوں تکمنتقل کر سکتا ہے۔
کورونا سے بچاؤ کے لئے ہاتھ بار بار صابن سے دھوئیں اور کھانستے یا چھینکتے وقت کہنی سے منہ ڈھانپیں ۔
افواہ
زندگی موت اور صحت بیماری سب اللٰہ کی مرضی ہے۔ کورونا وائرس کچھ نہیں

جواب اللٰہ تعالیٰ کی حاکمیت بر حق ہے مگر انسان کو اللٰہ تعالیٰ نے شعور دیا ہے تاکہ وہ اپنی ، اپنے عزیزواقارب ، ہمسایوں اور قوم کی صحت کے حوالے سے اپنا کردار اد کرے۔ کورونا وائرس کے پھیلاؤ سے آگہی اور اس سے بچاؤ کے لئے تدابیر کرنا ضروری ہے جس کے لئےمذہب بھی تنبیہ کرتا ہے۔
کورونا سے بچاؤ کے لئے ہاتھ بار بار صابن سے دھوئیں اور کھانستے یا چھینکتے وقت کہنی سے منہ ڈھانپیں ۔
افواہ
کورونا وائرس حرام جانوروں کا گوشت کھانے اور دین سے دوری کا انجام ہے

جواب
کورونا وائرس کی ابتدا کس جانور سے ہوئی، اس کے بارے مکمل معلومات دستیاب نہیں تاہم اس کے پھیلاؤ کے حوالے سے حلال حرام جانوروں کے گوشت سے مناسبت ٹھیک نہیں۔ موجودہ حالات میں یہ حقیقت ہے کہ کورونا وائرس مریض سے دوسرے لوگوںتک منتقل ہو رہا ہے۔ لہٰذا احتیاط کریں
کورونا سے بچاؤ کے لئے ہاتھ بار بار صابن سے دھوئیں اور کھانستے یا چھینکتے وقت کہنی سے منہ ڈھانپیں ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں