کراچی میں مون سون کے پانچویں اسپیل نے شہریوں کو ڈبو دیا

کراچی میں بارش کے بعد ایک بار پھر نالے اُبل گئے جس سے پانی شہریوں کے گھروں میں داخل ہوگیا۔
کراچی سمیت سندھ بھر میں گزشتہ روز مون سون کا پانچواں اسپیل شروع ہوا . جس میں گرج چمک کے ساتھ ہونے والی بارش کے بعد ندی نالے ابل پڑے، سرجانی ٹاؤن، یوسف گوٹھ اور بلدیہ ٹاون سمیت مضافاتی علاقوں میں بارش اور سیوریج کا پانی گھروں میں داخل ہوگیا۔
نارتھ کراچی میں گھروں میں پانی داخل ہونے سے قیمتی اشیاء ضائع ہو گئیں جب کہ سرجانی ٹاؤن یوسف گوٹھ میں کشتیوں کی مدد سے متاثرین کو ریسکیو کیا گیا۔
ناگن چورنگی، نیوکراچی، سرجانی ٹاؤن میں تاحال بارش کا پانی جمع ہے، فیڈرل بی ایریا کے مختلف علاقوں سے بارش کا پانی نہیں نکالا جاسکا۔
لنڈی کوتل سے طاہر ولا اور عائشہ منزل تک پانی ہی پانی ہے جب کہ ملیر میمن گوٹھ میں آسمانی بجلی گرنے سے دو نوجوان جان سے گئے۔
موسلادھار بارش کے بعد شہر کی صورتحال بدستور پہلے جیسی ہے، پچھلی بارش کی طرح کئی علاقوں سے برساتی پانی نکالا نہیں جاسکا
تباہ حال ہاکس بےروڈ پر رہی سہی کسر بارش نے نکال دی، ہاکس بےروڈ پر گڑہوں، جگہ جگہ پانی کھڑا ہونے سے ٹریفک کی روانی متاثر ہورہی ہے۔
اس کے علاوہ کراچی کے مختلف علاقوں میں بارش کا پانی گھروں میں موجود ہے، گھروں کے اندر اور باہر برساتی پانی سے
اس حوالے سے شہریوں کا کہنا ہے کہ گھروں میں پانی داخل ہونے کے باعث سارا سامان خراب ہوگیا، نکاسی آب کے لیے انتظامیہ سے اب تک کوئی نہیں آیا۔

ذرائع کے مطابق شہری اپنی مدد آپ کےتحت گھروں سے پانی نکالنے لگے، شہری گھروں میں موجود سامان کو بھی منتقل کرنے میں مصروف ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں