ڈاکٹر ماہا کیس، پستول کے مالک نے پولیس سے رابطہ کرلیا

ڈاکٹر ماہا کی مبینہ خودکشی کے معاملے پر تحقیقات جاری ہیں. اور پستول کے اصل مالک سعد نصیر نے پولیس سے رابطہ کرکے اہم معلومات پولیس کو فراہم کر دی ہیں
اس حوالے سے پولیس کا کہنا ہے کہ پستول کے اصل مالک سعد نصیر سےرابطہ ہوچکاہے، سعد نصیر کے اہلخانہ سے ماہا کے اہلخانہ نے رابطہ کیا۔
ڈیفنس کے رہائشی سعد نے پولیس افسر سے موبائل پررابطہ کیا اور پستول کے حوالے سے اہم معلومات دیں، سعد نصیر نے بتایا کہ انھوں نے وہ اسلحہ اپنے ایک دوست کو دیا تھا۔ لیکن وہ ڈاکٹر ماہا کے پاس کیسے پہنچا اس کا کچھ نہیں بتایا گیا. جس کی تحقیقات کی جا رہی ہیں . سعد نصیر نےاب تک تھانے آکر بیان قلمبند نہیں کرایا ، تاحال ماہا علی کےاہلخانہ اور دوست کابیان قلمبند کیا جا چکا ہے۔
پولیس کے مطابق پستول کے مالک سعد نصیر کے اہلخانہ سے ماہا علی کے اہلخانہ نے رابطہ کیا تھا۔ سعد نصیر ڈیفنس کا رہائشی ہے اور شادی شدہ ہے، سعد نے پولیس افسر سے رابطہ کیا اور پستول کے حوالے سے اہم معلومات دیں۔

خاتون ڈاکٹر ماہا علی کی مبینہ خودکشی کے معاملے میں تحقیقات کا دائرہ کار وسیع تو خودکشی میں استعمال ہونے والا اسلحہ سعد نصیرنامی شخص کے نام نکلا ، سعد نصیرنے 2010میں بشیر خان ٹریڈنگ کمپنی سےاسلحہ خریداتھا اور جائے وقوع سے ملنے والا اسلحہ بیرون ملک سے بلوچستان آیا تھا۔
ماہا شاہ کے انتقال کے بعد اہل خانہ نے کسی بھی قسم کی کارروائی سے انکار کر دیا تھا اور میت آبائی علاقے میرپور خاص لے گئے ، ماہا شاہ میرپور خاص کے قریب گروڑ شریف کے گدی نشین کی بیٹی ہیں، ان کے والدین میں علیحدگی ہوچکی ہے اور دونوں نے دوسری شادی کر رکھی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں