خاتون اول ثمینہ علوی نے پاکستانی ڈراموں‌پر اپنے خیالات کا اظہار کر دیا

صدر پاکستان عارف علوی کی اہلیہ خاتون اول ثمینہ علوی کا کہنا ہےکہ وہ پاکستانی ڈرامے دیکھ کر ڈپریشن کا شکار ہوجاتی ہیں۔
خاتون اول ثمینہ علوی نے پاکستانی ڈراموں پر اپنے تاثرات کا اظہار نجی ویب سائٹ ’ انڈیپینڈنٹ اردو ‘ کو دیے گئے ایک انٹرویو میں کیا۔
انہوں نےکہا کہ میں پاکستانی ڈرامے نہیں دیکھتی، نہ جانے کیوں لیکن مجھے ان ڈراموں کو دیکھ کرڈپریشن ہونے لگتا ہے۔
انہوں نے کہا کہ میں نے پاکستانی ڈراموں کی کہانیوں میں شادیوں اور افیئرز کے موضوعات پر کئی لوگوں سے تبادلہ خیال کیا جس پر جواب ملا کہ ان موضوعات کی درجہ بندی ریٹنگ کے باعث کی جاتی ہے لیکن میں اس سے اتفاق نہیں رکھتی۔
خاتون اول کا کہنا تھا کہ ہم آخر کیوں مہذب مواد نشر نہیں کرتے؟ اچھا ڈرامائی مواد بنے گا تو سراہا بھی جائے گا جب کہ ٹیلی ویژن پر نشر کیا جانے والے مواد چاہے وہ اچھا ہویا برا، لوگ خصوصاً بچے اس سے ضرور سیکھتے ہیں، آپ جس چیز پر ڈالیں گے بچے اسی طرف جائیں گے جو ہم بچوں کو دکھائیں گے بچے آگے بھی وہی کریں گے۔
پاکستانی ڈراموں پر تبصرہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اب وقت آگیا ہے کہ پاکستانی ڈراموں کے مشمولات تبدیل کیے جائیں۔
اس دوران ثمینہ علوی نے شہرہ آفاق ترکش ڈرامے ارطغرل غازی کی تعریف کرتے ہوئے اس کے مواد کو سراہا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں