مہلک وائرس کورونا کی غیر جاندار چیزوں پر کتنی زندگی ہوتی ہے؟

مہلک وائرس کورونا وائرس جسے ماہرین نے کووڈ-19 کا نام بھی دیا ہے. اب تک 188 ممالک میں اپنے پنجے گاڑ چکا ہے. اور ایک عالمی وبا کی صورت اختیار کر چکا ہے. اور پوری دنیا میں اس وائرس کا خوف پھیلا ہے.تمام طاقتور ممالک بھی اس وائرس کے آگے بے بس اور خوف زدہ ہیں. اس وائرس کا پھیلاؤ ہر ملک میں ہی تیزی سے ہوا اور اب پاکستان بھی اس وائرس کی لپیٹ میں ہے. جس سے اب تک 6 افراد ہلاک جبکہ 884 سے زائد افراد اس وائرس سے متاثر ہیں
آئیے آپ کو یہ بتائیں کہ یہ مہلک وائرس غیر جاندار چیزوں پر کتنی دیر تک زندہ رہ سکتا ہے؟
اس حوالے سے حال ہی میں ‘نیو انگلینڈ جرنل آف میڈیسن ‘ میں ایک مطالعہ شائع کیا گیا ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ آیا یہ کورونا وائرس انسانی جسم کے علاوہ دیگر سطحوں یعنی پلاسٹک، دھات یا گتّے پر کتنی دیر تک زندہ رہ سکتا ہے۔
سائنسدانوں کا ماننا ہے کہ کورونا وائرس ایک دوسرے کو چھونے سے باآسانی پھیل سکتا ہے اور یہ وائرس ہوا میں معلق پانی کے قطروں یا ذرات میں 3 گھنٹے تک زندہ رہ سکتا ہے۔
تحقیق میں سائنسدانوں نے یہ نتیجہ اخذ کیا ہے کہ کورونا وائرس تانبے کی سطح پر 4 گھنٹے تک زندہ رہنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔
سائنسدانوں کی جانب سے کی جانے والی تحقیق کے مطابق کورونا وائرس کارڈ بورڈ یعنی گّتے پر 24 گھنٹے تک زندہ رہ سکتا ہے۔
کورونا وائرس سب سے دیر تک پاسٹک یا اسٹیل کی سطح پر رہ سکتا ہے اور اس کا دورانیہ دو سے تین دن تک ہو سکتا ہے، یعنی وائرس پلاسٹک اور اسٹیل پر تین دن تک موجود رہتا ہے
اس لیے صرف انسانوں سے ہی نہیں. بے جان چیزیں بھی احتیاط سے استعمال کریں تاکہ کسی بھی پریشانی سےبچا جا سکے
اب دیکھنے میں آرہا ہے کہ اس وائرس کی وجہ سے لوگ مختلف چیزیں چھونے سے گریز کر رہے ہیں خاص طور پر وہ چیزیں جو عوامی مقامات پر ہیں جن پر جراثیم کے ہونے کے خدشات زیادہ ہیں
متعدد لوگ بسوں اور ٹرینوں میں سفر کرنے سے گریز کر رہے ہیں کیونکہ ٹرین یا بس میں کھڑے ہونے کے لیے انہیں ہینڈل بھی پکڑنا پکڑتے ہیں جس سے وائرس کا خطرہ لاحق ہو سکتا ہے۔
نزلا، زکام اور دیگر انفکیشنز کی طرح کووڈ-19 بھی ایک شخص سے دوسرے شخص میں با آسانی منتقل ہو سکتا ہے، ماہرین کے مطابق انسان کی کھانسی یا چھیکنتے وقت 3000 ڈروپلٹس (قطرے) منہ سے نکلتے ہیں جو کہ ہوا کے ذریعے کسی دوسرے شخص میں وائرس منتقل کر سکتے ہیں۔
اس مہلک وائرس کے پھیلاؤ سے کیسے بچا جائے؟
1۔ بیمار لوگوں کے قریب یا انہیں چھونے سے گریز کریں۔
2۔ اپنی آنکھوں، ناک اور منہ کو نہ چھوئیں۔
3۔ اگر آپ بیمار ہیں تو گھر سے باہر ہرگز نہ نکلیں۔
4۔ کھانسی اور چھینکتے وقت منہ کو ٹشو سے ڈھکیں اور اسے فوراً پھینک دیں۔
5۔ گھر کی ایسی جگہیں جہاں سب سے زیادہ ہاتھ لگتے ہوں تو انہیں جراثیم کش اسپرے کی مدد سے فوراً صاف کریں۔
اب تک دنیا بھر میں کورونا وائرس سے ہلاکتوں کی تعداد 13 ہزار سے تجاوز کر گئی ہے جب کہ کورونا سے متاثرہ کیسز کی تعداد 3 لاکھ سے زائد ہو چکی ہے۔ پاکستان میں بھی اس وائرس نے اپنے پنجے گاڑ لیے ہیں. جس سے ملک کے مختلف صوبوں میں لاک ڈاؤن کر دیا گیا ہے اور عوام کو گھروں میں رہنے کی تلقین کی گئی ہے. تاکہ اس وائرس کے پھیلاؤ کو روکا جا سکے

اپنا تبصرہ بھیجیں