کراچی کے علاقے کلفٹن میں لڑکی سے اجتماعی زیادتی

کراچی کے علاقے کلفٹن میں ملازمت پیشہ خاتون سے مبینہ اجتماعی زیادتی کا واقعہ پیش آیا ہے۔ 22 سالہ لڑکی کلفٹن کے ایک مال میں ملازمت کرتی ہے جسے پیر 21 ستمبر کی رات ساڑھے نو بجے دو ملزمان نے اپنی گاڑی میں اغواء کیا اور ایک فلیٹ پر لے گئے۔
ملزمان نے لڑکی کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا اور پھر اسے کلفٹن میں جہاں سے اغواء کیا گیا تھا وہیں پھینک کر فرار ہوگئے۔

جس کے بعد لڑکی پولیس کو رپورٹ کرنے کے بجائے اپنے گھر چلی گئی تھی تاہم آج اکیلے کلفٹن تھانے پہنچی جہاں پہلے واردات کا مقدمہ درج کیا گیا اور پھر اسے میڈیکل اگزامینیشن کےلیے جناح اسپتال منتقل کیا گیا جہاں ڈاکٹرز کی ابتدائی رپورٹ میں زیادتی کی تصدیق ہوگئی ہے۔ پولیس حکام کے مطابق متاثرہ لڑکی کا ڈی این اے بھی کروالیا گیا ہے تاہم متاثرہ لڑکی اور اہلخانہ سامنے نہیں آنا چاہتے۔
اطلاعات کے مطابق ملزمان کی تلاش کے لیے چھاپے مارے جا رہیں‌ ہیں. ملزمان جہاں‌لڑکی کو فلیٹ‌ میں‌ لے کر گئے تھے . وہان سے اب فرار ہیں‌. ملزمان کے رشتے داروں کےگھر بھی چھاپے مارے جا رہے ہیں‌. لیکن ابھی تک وہ پولس کی گرفت میں‌ نہیں‌آ سکے ‌.متاثرہ لڑکی نے با اثر ملزمان کے بارے میں بھی بتایا ہے اور جلد انہیں گرفتار کر لیا جائے گا۔
مزید پڑھیں
پولیس نے دعویٰ کیا ہےکہ کلفٹن میں لڑکی سے اجتماعی زیادتی میں ملوث دونوں ملزمان کی شناخت کرلی گئی ہے۔
پولیس کے مطابق مرکزی ملزم نے اپنے کزن کے ساتھ مل کر لڑکی سے زیادتی کی، واقعے میں ملوث دونوں ملزمان سے متعلق تمام تر شواہد اکٹھے کرلیے ہیں۔
پولیس کا کہنا ہےکہ مرکزی ملزم اور اس کے کزن نے اپنے نوکر کے سامنے لڑکی سے زیادتی کی، ملزمان اپنے موبائل نمبرز بند کرکے روپوش ہوگئے ہیں جن کی گرفتاری کے لیے چھاپوں کا سلسلہ تیز کردیا گیا ہے۔

پولیس کے مطابق تفتیش کے دوران ملنے والا ملزم کا نمبر اس کے والدین کے نام پر رجسٹرڈ ہے، لڑکی کی جانب سے پولیس کو دیےگئے ایک موبائل نمبر سے متعلق تفتیش مکمل کرلی گئی ہے، لڑکی کے مطابق ملزمان نے یہ نمبر اسے دیا تھا، موبائل نمبر ایک با اثر شخص کا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں