تجزیہ کار نواز شریف کی واپسی کے بارے میں کیا کہتے ہیں ؟

تجزیہ کاروں نے نواز شریف کی واپسی سے متعلق اپنے خیالات کا ا‌ظہار کیا . ان کا کہنا ہےکہ پاکستان میں احتساب کے حوالے سے جو ماحول ہے اس تناظر میں بھی نواز شریف کو برطانیہ سے واپس لانا مشکل لگتا ہے۔
فواد چوہدری کہتے ہیں کہ جنوری تک نواز شریف کو واپس لانے میں کامیاب ہوجائیں گے۔
وفاقی وزیر کے دعویٰ کا جواب دیتے ہوئے تجزیہ کاروں نے کہا کہ نواز شریف ان قوانین کی رو سے غیرملکی مجرم نہیں ہے کیونکہ انہیں کسی برطانوی عدالت نے سزا نہیں دی۔
بابر ستار نے کہا کہ برطانیہ اورپاکستان کے درمیان تحویل ملزمان کا کوئی معاہدہ نہیں ہے، برطانوی حکومت واضح کرچکی ہے کہ تحویل ملزمان کا ایسا کوئی معاہدہ نہیں کیا جائے گا جس میں سیاسی نوعیت کے معاملات پر کارروائی ہو، پاکستان میں احتساب کے حوالے سے جو ماحول ہے اس تناظر میں بھی نواز شریف کو برطانیہ سے واپس لانا مشکل لگتا ہے۔

ارشاد بھٹی کا کہنا تھا کہ پاکستان نے برطانیہ سے اپنے سزایافتہ مجرم کو واپس مانگا ہے، برطانوی حکومت اگر ہماری معصوم حکومت کو یہ خط لکھ دے کہ کوئی شرم ہوتی ہے کوئی حیا ہوتی ہے آپ نے اپنا سزایافتہ مجرم کیوں بھیجا تھا، پوری حکومت بھی لندن جاکر بیٹھ جائے تب بھی محبوب امام کو واپس نہیں لاسکتی ہے۔
یہ بھی پڑھیں‌:‌ حکومت پاکستان نے برطانیہ کو خط لکھ دیا

اپنا تبصرہ بھیجیں