ٹک ٹاک کی جانب سے 1 کڑور 40 لاکھ ویڈیوز کو ڈیلیٹ کرد یا گیا

معروف ویڈیو شیئرنگ ایپلیکیشن ٹک ٹاک نے گائیڈ لائن کی خلاف ورزی پر 1 کروڑ چالیس لاکھ ویڈیوز کو پلیٹ فارم سے ڈیلیٹ کردیا
ٹک ٹاک ترجمان کی جانب سے جاری ہونے والے اعلامیے میں بتایا گیا ہے کہ پلیٹ فارم پر دنیا بھر سے شیئر ہونے والی ویڈیوز میں سے 1 کروڑ چالیس لاکھ ایسی تھیں جو غیرمعیاری تھیں یا پھر اُن میں پالیسی کو نظر انداز کیا گیا تھا۔ اس لیے ان ویڈیوز کو ڈیلیٹ کیا گیا .
اعلامیے کے مطابق گائیڈ لائن کی خلاف ورزی پر ٹک ٹاک انتظامیہ نے یہ قدم اٹھایا. ٹک ٹاک ٹرانسپرینسی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ 96.4 فیصد ویڈیوز کو صارفین کے رپورٹ کرنے سے پہلے ہی ڈیلیٹ کردیا گیا جبکہ 90.3 فیصد ویڈیوز کو صارفین نے دیکھنے کے بعد رپورٹ کیا۔
ٹک ٹاک سے ڈیلیٹ ہونے والی ویڈیوز میں کرونا کے خلاف بنائی جانے والی ویڈیوز اور انتخابات یا سیاسی مقاصد کے لیے بنائی جانے والی ویڈیو ز شامل ہیں . اس کے علاوہ ٹک ٹاک نے خودکشی کے رجحان، غیراخلاقی اور نازبیا ویڈیوز بھی ڈیلیٹ کیں۔
کمپنی نے یہ کریک ڈاؤن ایک ایسے وقت میں کیا ، جب امریکا کے محکمہ اقتصادیات نے ٹک ٹاک ڈاؤن لوڈ کرنے اور اس کی اپ ڈیٹس پر مکمل پابندی عائد کی ہے
امریکی حکام کا ماننا ہے کہ ٹک ٹاک پر صارفین کا ڈیٹا محفوظ نہیں ہے، 1 ارب سے زائد امریکی اس ایپ کو استعمال کررہے ہیں جن کا ڈیٹا چین کی سیاسی جماعت کے پاس موجود ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں