جرمنی یونیورسٹی نے سست اور کاہل لوگوں کو وظائف دینے کا اعلان کر دیا

جرمن یونیورسٹی نے ایسے لوگوں کو وظائف دینے کا فیصلہ کیا ہے جو کچھ نہیں کرنا چاہتے ہیں یعنی وہ سُستی اور کاہلی میں اپنا ثانی نہیں رکھتے۔
تفصیلات کے مطابق جرمنی یونیورسٹی کی انتظامیہ ایسے لوگوں کو وظائف دے رہی ہے اور ان لوگوں کو بھی پیسہ دینے کو تیار ہے جو کم سے کم کام کرتے ہوں۔
ہیمبرگ میں یونیورسٹی آف فائن آرٹس ایک انوکھے پروجیکٹ میں حصہ لینے کے لئے ایسے لوگوں کی تلاش کر رہی ہے جو سست ہوں اور جو کام نہ کرتے ہوں
غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق درخواست دہندگان کو یونیورسٹی کے اکیڈمکس کو یہ بھروسہ دلانا ہو گا کہ1600 یورو کے تین وظائف میں سے ایک کو جیتنے کے لئے دلچسپ طریقہ سے کس طرح غیرفعال ہوں گے۔

درخواست فارم میں درخواست دہندگان سے دو سوال پوچھے گئے ہیں۔ پہلا یہ کہ آپ کیا نہیں کرنا چاہتے ہیں اور جو آپ کرنا نہیں چاہتے ہیں ، وہ نہ کرنا کیوں اہم ہے؟ اس کے لئے درخواست دہندگان 15 ستمبر تک درخواستیں دے سکتے ہیں۔
اس پروجیکٹ کو ڈیزائن کرنے والے پروفیسر فریڈرک وان بورس کے مطابق معاشی سماجی تبدیلی لانے میں مدد کرنے کے لئے سستی، کاہلی کا باریکی سے مطالعہ کرنا اہم ہے۔
یہ تجربہ زندگی میں مسلسل کامیابی حاصل کرنے کی دوڑ سے باہر نکالنے اور اپنے دائرے میں گھومتے جا رہے زندگی کے پہیے سے الگ ہٹنے سے وابستہ ہے۔
پورے جرمنی کے درخواست دہندگان کو 15 ستمبر سے پہلے فعال غیر فعالیت نامی اپنے پروجیکٹ سے متعلق خیالات کو جمع کرنا ہوگا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں