وزیراعظم کا مارک زگر برگ کو خط

وزیراعظم عمران خان نے فیس بک کے بانی مارک زکر برگ کو خط لکھ کر اسلامو فوبیا کے خلاف مواد پر فوری پابندی کا مطالبہ کردیا۔
وزیراعظم عمران خان نے فیس بک کے بانی مارک زکر برگ سے مطالبہ کیا کہ فیس بک ہولو کاسٹ کی طرح اسلام مخالف مواد پر پابندی عائد کرے، عمران خان نے فیس بک پر اسلامو فوبک مواد کی نشاندہی بھی کی۔
وزیراعظم کا کہنا تھا کہ اسلام مخالف مواد سوشل میڈیا بشمول فیس بک پرپھیلایا جارہا ہے، ایسا مواد نفرت، انتہاپسندی، تشدد کی حوصلہ افزائی کررہا ہے۔
عمران خان نے کہا کہ فیس بک کی طرف سے ہولوکاسٹ پرتنقید پرعائد پابندی کی تعریف کرتا ہوں، آج دنیا کے مختلف حصوں میں مسلمانوں کےخلاف اسی طرح کا معاملہ دیکھ رہا ہوں۔

انہوں نے کہا کہ بدقسمتی سے مسلمانوں کو لباس سےعبادت تک کے ذاتی انتخاب سے روکا جارہا ہے، ہم مسلمانوں کے خلاف دنیا کے مختلف ممالک میں یہی صورت حال دیکھ رہے ہیں، بدقسمتی سے کچھ ممالک میں مسلمانوں کو شہریت کے حقوق حاصل نہیں،۔
وزیراعظم کا کہنا تھا کہ بھارت میں مسلمانوں کے خلاف قوانین بنائے گئے، مسلمانوں کا قتل اور انہیں کورونا کا ذمہ دار ٹھہرانا اسلاموفوبیا کا اثر ہے، فرانس میں اسلام کو دہشتگردی سے جوڑا گیا،گستاخانہ خاکوں کی فرانس میں اجازت دی گئی۔
اس سے قبل وزیر اعظم کا ٹویٹ میں کہنا تھا کہ فرانسیسی صدر کے بیان سے کروڑوں مسلمانوں کے جذبات مجروح ہوئے، فرانسیسی صدر نے جان بوجھ کر اسلام پر حملہ کر کے اسلامو فوبیا کی حمایت کی۔
ان کا کہنا تھا کہ جہالت پر مبنی بیانات انتہا پسندی کو مزید فروغ دیتے ہیں، دنیا مزید تقسیم کی متحمل نہیں ہو سکتی، لیڈر کی پہچان یہ ہے کہ وہ انسانوں کو متحد کرتا ہے، جیسے نیلسن منڈیلا نے تقسیم کی بجائے لوگوں کومتحد کیا۔
عمران خان نے اپنے ٹویٹ میں لکھا تھا کہ پولرائزیشن بنیاد پرستی کا سبب بنتی ہے، فرانسیسی صدر کے بیان سے کروڑوں مسلمانوں کے جذبات کو ٹھیس پہنچی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں