کراچی میں ہونے والی بارش نے نظام زندگی درہم برہم کر دیا

کراچی میں گزشتہ روز بارش کیا ہوئی . دیکھتے ہی دیکھتے پانی پانی ہو گیا اور کراچی کی ہر شے ہی پانی میں‌ ڈوب گئی ،وہ چاہے کوئی شے ہو یا انسان ہی . کراچی کی اہم شاہراہوں پر پانی جمع ہو نے سے شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا، بارش کے باعث کرنٹ لگنے سمیت مختلف واقعات میں 5 افراد بھی جاں بحق ہوئے۔
اس صورتحال کو دیکھتے ہوئے پی ٹی آئی قیادت نے حکومت سندھ کو آڑے ہاتھوں لیا اور وفاقی وزرا نے سوشل میڈیا پر بیانات کی بھر مار کر دی۔
وفاقی وزیر اطلاعات سینیٹر شبلی فراز نے کہا کہ کراچی ڈوبا ہوا ہے اور نیرو اپنی سالگرہ منا رہا ہے، پیپلز پارٹی تیسری بار اقتدار میں لانے والے ووٹرز سے انتقام لے رہی ہے۔
وفاقی وزیر علی زیدی نے کہا کہ 12 سال سے زائد عرصے سے اقتدار میں رہنے والی پیپلز پارٹی کراچی کے برساتی نالوں اور گٹر کی صفائی کا انتظام بھی نہیں کر سکی۔
بلاول پر تنقید کرتے ہوئے علی زیدی نے کہا کہ سیاستدان ہونے کا ڈھونگ رچانے والا ایک بگڑا لاڈلا ٹی وی پر بیٹھ کر ہر کسی کو ہر برائی کا ذمہ دار ٹھہراتا ہے، یہ مجرمانہ غفلت کی انتہا ہے۔
وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے سیاسی روابط شہباز گل کا کہنا تھا کہ کراچی کے شہریوں کو اپنے پیاروں کی لاشیں نکالتے دیکھ کر دل غمگین ہو گیا ہے۔

صرف یہی نہیں بلکہ کراچی میں بارش شروع ہوتے ہی شہر کے بیشتر حصوں میں بجلی کی فراہمی معطل ہو گئی تھی۔
بجلی سپلائی کمپنی کے الیکٹرک کا کہنا ہے کہ بارش کے بعد شہر کے نشیبی علاقوں کے 45 فیڈرز اب تک بحال نہیں ہو سکے ہیں۔

کے الیکٹرک کے ترجمان کا کہنا ہے کہ بارش کا پانی جمع ہونے کی وجہ سے یونیورسٹی روڈ اور گلستان جوہر متاثر ہیں، بلدیہ میں بھی بارش کا پانی جمع ہونے پر بجلی کی فراہمی بند ہے۔
ترجمان کا کہنا ہے کہ بن قاسم کے بھی بیشتر علاقوں کو بجلی کی فراہمی بند ہے جب کہ پی ای سی ایچ ایس سوسائٹی میں چند بلاکس میں پانی کی نکاسی نہ ہونے سے بجلی بحال نہیں ہو سکی ہے۔
اورنگی ٹاؤن اور کورنگی میں زیر آب علاقوں میں بجلی کی سپلائی اب تک بند ہے جب کہ سرجانی کے علاقوں میں بھی بارش کا پانی جمع ہونے کی وجہ سے بجلی کی فراہمی اب تک معطل ہے۔
کے الیکٹرک کے حکام کا کہنا ہے ڈیفنس کے نشیبی علاقے کا ایک فیڈر ہی متاثر ہے جب کہ گلشن اقبال کے بھی ایک بلاک میں پانی جمع ہونے پر بجلی بند ہے۔
جس سے شہریوں‌کی مشکلات مزید بڑھ گئی ہیں ، اور وہ اپنے منتخب کیے گئے نمائندوں کو دیائیاں‌دے رہے ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں