ڈونلڈ ٹرمپ اپنی ضد پر قائم لیکن کیوں ؟

امریکا کے موجودہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی ضد بدستور قائم ہے، ان کا کہنا ہے کہ جو بائیڈن کو زیادہ ووٹ ڈلوانے کا انتظام کیاگیا تھا
تفصیلات کے مطابق اپنے ایک ٹویٹ میں صدر ٹرمپ بہ ضد دکھائی دے رہے ہیں کہ وہ انتخابات میں ہارے نہیں بلکہ جو بائیڈن کو دھاندلی سے جتوایا گیا ہے۔
انھوں نے ٹویٹ میں لکھا کہ بائیڈن کسی صورت 8 کروڑ ووٹ نہیں لے سکتے، موجودہ انتخابات 100 فی صد دھاندلی زدہ تھا۔ ادھر سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر کی انتظامیہ نے صدر ٹرمپ کے ٹویٹ میں دعووں کو متنازع قرار دے دیا ہے۔

دوسری طرف بائیڈن کو چینی صدر شی جن پنگ نے الیکشن جیتنے پر مبارک باد دے دی ہے، انھوں نے ایک بیان میں کہا کہ چین امریکا تعلقات میں بہتری کی امید ہے۔ خیال رہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ مسلسل چین پر تنقید کرتے آ رہے ہیں بالخصوص کرونا وبا کے حوالے سے انھوں نے تواتر کے ساتھ چین کو قصور وار قرار دیا جس کی وجہ سے دونوں ممالک کے تعلقات خراب رہے۔
جو بائیڈن کو روسی صدر ولادی میر پیوٹن نے تاحال مبارک باد نہیں دی ہے، امریکی میڈیا کا کہنا ہے کہ پیوٹن کے لیے جوبائیڈن اب تک صرف صدارتی امیدوار ہیں۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز پنسلوانیا میں عوامی سماعت کے دوران فون پر ٹرمپ نے کہا تھا کہ ہمارے پاس انتخابات جیتنے کے کافی ثبوت موجود ہیں اور اب دلائل سننے کے لیے صرف ایک اچھے جج کی ضرورت ہے۔ امریکا میں حلف برداری کی تقریب 20 جنوری کو منعقد ہوگی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں