پاکستان نے ٹیسٹ اننگز میں سست روی دکھائی

ٹیسٹ کرکٹ کو صبر اور آزمائش والی کرکٹ کہا جاتا ہے اور اس میں زیادہ دیر وکٹ پر کھڑے رہنے والے کھلاڑی کی ہی جیت ہوتی ہے لیکن قومی ٹیم نے ٹیسٹ کرکٹ میں ایک منفرد اعزاز اپنے نام کیا ہے۔
پاکستان نے نیوزی لینڈ کے خلاف پہلے ٹیسٹ کی پہلی اننگز میں وکٹیں گرنے کے باعث انتہائی سست روی سے بیٹنگ کرتے ہوئے 65 اوورز میں صرف 100 رنز مکمل کیے۔

2001 کے بعد یہ پہلا موقع ہے کہ پاکستان نے سب سے زیادہ اوورز کھیل کر اننگز کے 100 رنز مکمل کیے ہوں۔ اور اسکور کو نہایت سست روی سے آگے بڑھایا ہو
پاکستانی کھلاڑی ناقص بلے بازی کا مظاہرہ کرتے ہوئے 112 رنز کے مجموعے پر چھ وکٹ گنوا بیٹھے۔ نیوزی لینڈ کے شہر ترنگا کے ماؤنٹ مونگانوئی میں کھیلے جارہے پاکستان بمقابلہ نیوزی لینڈ ٹیسٹ میچ سیریز کی پہلی اننگز میں کیویز نے شاہینوں کے پر کاٹ دئیے۔
تیسرے دن کا کھیل شروع ہوا تو 43 رنز کے مجموعے پر پاکستان کے تین کھلاڑی شان مسعود، عابد علی اور محمد عباس آؤٹ ہوگئے۔
اظہر علی اور حارث سہیل بھی ٹیم کے مجموعے میں خاطر خواہ اضافہ نہ کرسکے اور اظہر علی 5 رنز بناکر جبکہ حارث سہیل 3 رنز بناکر پویلین لوٹ گئے۔
پاک نیوزی لینڈ ٹیسٹ میچ کی پہلی اننگز کے دوران چھٹے نمبر پر آنے والے فواد عالم بھی 9 رنز بناکر 81 کے مجموعے پر آؤٹ ہوگئے۔
تیسرے دن کا میچ ایک مرتبہ پھر بارش کے باعث روک دیا گیا ہے تاہم میچ روکے جانے سے قبل فہیم اشرف اور کپتان محمد رضوان پچ کر موجود تھے اور ٹیم کا مجموعی اسکور 112 رنز تک پہنچ چکا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں