مناسکِ حج کا آغاز آج سے ہو گیا

مکہ مکرمہ میں آج سے مناسکِ حج کا آغاز ہو گیا ہے .حج کے دوران کورونا سے
بچاؤ کے حفاظتی اقدامات کو بھی مدنظر رکھا جائے گا . جس کے لیے مسجد الحرام میں سماجی فاصلہ برقرار رکھنے کے لیے مخصوص نشانات لگا دیے گئے ہیں۔
عازمین حج منیٰ میں خصوصی کمپلیکس میں قیام کریں گے جب کہ حج کا رکن اعظم وقوف عرفہ کل ادا کیا جائے گا۔ اس کے علاوہ غلاف کعبہ کو آج تبدیل کیا جائے گا

یومِ عرفہ کے لیے مسجدِ نمرہ میں بھی عازمین کے لیے مخصوص نشان لگائے گئے ہیں۔ اور اس طرح اس سال کا حج مسلمان ادا کر رہے ہیں . جس میں مسلمان کم تعداد میں ہیں .اور 10 ہزار مسلمان ہی اس دفعہ یہ سعادت حاصل کر رہے ہیں. دنیا بھر سے اس دفعہ حج کی سعادت کوئی بھی ادا نہیں کر رہا. ان میں سعودی عرب میں مقیم غیرملکی تارکینِ وطن کی تعداد 70 فی صد ہے اور 30 فی صد سعودی شہری ہیں۔

وقوف عرفہ جو کل ادا کیا جائے گا ، حج کا رکن اعظم ہے، اس رکن کی ادائیگی کیلئے عازمین حج کی روانگی کا عمل آٹھ ذی الحجہ کی رات سے ہی شروع ہو جائے گا جو اگلے دن نماز ظہر تک مکمل ہو گا۔
عازمین حج نو ذی الحجہ عرفات پہنچ کر نمازِ ظہر اور عصر ادا کریں گے اور مغرب تک میدان عرفات میں وقوف کرینگے۔ غروب آفتاب کے ساتھ ہی حجاج کرام مزدلفہ کی طرف روانہ ہوجائیں گے اور مزدلفہ پہنچ کر مغرب اور عشا کی نمازیں اکھٹی پڑھیں گے۔

کورونا وائرس کے پیش نظر حج سے پہلے منیٰ، مزدلفہ اور عرفات میں تمام مساجد میں صفائی اور جراثیم کش اسپرے کا کام مکمل کر لیا گیا تھا۔

خیال رہے کہ گزشتہ برس 25 لاکھ سے زیادہ فرزندانِ توحید نے فریضۂ حج ادا کیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں