بشریٰ انصاری نے شادی کے 36 سال بعد طلاق کیوں‌ لی ؟

پاکستان شوبز انڈسٹری کی مقبول اداکارہ بشریٰ انصاری نے شادی کے 36 سال بعد طلاق کی وجوہات بیان کردیں۔
اداکارہ بشریٰ انصاری میزبا ن واداکار میرا سیٹھی کے ویب شو میں جلوہ گر ہوئیں۔ ویب شو میں شادی کے 36سال بعد طلاق کی وجوہات سے متعلق بشریٰ انصاری کا کہنا تھا کہ طلاق آپ کی زندگی کے برے حالات سے نکلنے کا ایک حل ہے، میں نے شادی کے 36 سال بعد طلاق دینے کا فیصلہ کیا کیونکہ میرے پاس طلاق کا حق تھا اور یہ حق مجھے میرے والد نے لے کر دیا تھا کہ میری بیٹی جب چاہے طلاق دے۔
اداکارہ کا کہنا تھا کہ ہمیں رشتے میں مسائل نظر آنے لگے لیکن تب تک ہمارے بچے اسکول جارہے تھے۔
بشریٰ انصاری نے بتایا کہ مجھے جب بھی اپنے شوہر سے کوئی مسئلہ ہوا تو میں حال کا تجزیہ مستقبل سے کیاکرتی تھی کہ آیا یہ صورتحال بہتر ہے یا آنے والی ہوگی اگر مستقبل کی صورتحال بہتر نہیں تو پھر یہی ٹھیک ہے۔
اداکارہ نے کہا کہ کیونکہ میری بیٹیاں تھیں تو میں یہی سوچتی تھی کہ اگرشوہر سے علیحدگی کے بعد ان کو کسی اور(دوسرے شوہر ) نے پریشان کیا تو ؟ لہٰذا میں نے سوچا کہ ابھی ایک میں پریشان ہوں تو کل کو میری بیٹیاں بھی ہوسکتی ہیں جو مسائل یہاں ہیں وہی مسائل کسی دوسرے شوہر کے ساتھ بھی ہوسکتے ہیں، ایسے کرتے کرتے 36 سال گزر گئے۔
اداکارہ نے مزید بتایا کہ پھر جب بچے اپنے گھر کے ہوگئے اور ان کی اپنی فیملی ہوگئی تب ہم نے ایک دوسرے سے علیحدگی کا فیصلہ کیا۔

بشریٰ انصاری نے 1978 میں پروڈیوسر اقبال انصاری سے شادی کی تھی جس سے اُن کی دو بیٹیاں ناریمن انصاری اور میرا انصاری ہیں۔ گزشتہ سال انہوں نے اقبال انصاری سے طلاق لے لی تھی جس کے بعد یہ خبریں سامنے آئیں کہ انہوں نے اداکار وہدایت کار اقبال حسین سے دوسری شادی کرلی ہے تاہم انہوں نے اس کی تردید کردی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں