کراچی میں‌بارش تو ختم ہو گئی لیکن اب تک ڈیفنس کے متعدد علاقوں میں بجلی بحال نہ ہو سکی

کراچی میں بارشوں کے 4 روز بعد بھی کلفٹن اور ڈیفنس کے مختلف علاقوں میں بجلی بحال نہ ہو سکی،کلفٹن کے رہائشیوں کی جانب سے بجلی کی مسلسل بندش کے خلاف مظاہرہ کیا گیا اور اس دوران ایک شخص آگ کی لپٹ میں آگیا۔
کراچی میں بارش کے بعد اب چوتھا روز شروع ہو گیا ہے، تاہم شہر کے مختلف علاقوں میں بجلی کی فراہمی اب تک بحال نہ ہو سکی . جس سے شہری سراپا احتجاج ہیں

اطلاعات کے مطابق ڈیفنس کے کچھ علاقوں میں گزشتہ رات بجلی بحال ہو گئی تھی تاہم ڈیفنس 26 اسٹریٹ اور ڈیفنس فیز 6 سمیت مختلف علاقوں میں بجلی کی فراہمی تاحال معطل ہے۔ جبکہ سرجانی ٹاؤن کے مختلف علاقوں اور کھارادر میں بھی بجلی کی فراہمی تاحال بحال نہیں ہو سکی ۔

ترجمان کے الیکٹرک کا کہنا ہے کہ بخاری کمرشل، اتحاد کمرشل، خیابان شہباز اور 26 اسٹریٹ میں پانی موجود ہے جس کے باعث 5 فیڈرز پر اب تک بجلی بحالی نہیں ہو سکی ہے۔
کلفٹن بلاک 4 اور 8 میں بجلی کی مسلسل بندش کے خلاف شہریوں نے احتجاج کیا، مظاہرین نے کے الیکٹرک اور کلفٹن کنٹونمنٹ کے خلاف شدید نعرے بازی بھی کی۔

احتجاج کے دوران مظاہرین نے ٹائر جلا کر شاہراہ کو ٹریفک کے لیے بند کر دیا جب کہ اس دوران ٹائر جلانے والا ایک نوجوان آگ کی لپیٹ میں آگیا تاہم وہاں موجود دیگر افراد نے آگ بجھا کر نوجوان کو اسپتال روانہ کر دیا۔
بجلی کی بندش کے حوالے سے کے الیکٹرک کے ڈسٹری بیوشن ہیڈ احسن انیس نے دعویٰ کیا ہےکہ ڈیفنس اور کلفٹن کے علاوہ اس وقت بڑے پیمانے پر کسی علاقے میں بجلی بند نہیں۔
احسن انیس کا کہنا ہے کہ ڈیفنس اور کلفٹن کے علاوہ دیگرعلاقوں میں پانی اتنی دیر جمع نہیں رہا، ڈیفنس کے 4 سے 5 علاقوں میں پانی موجود ہے جب کہ بخاری کمرشل، نشاط کمرشل اور اتحادکمرشل کے علاقوں میں بھی پانی موجود ہے، اس سلسلے میں سی بی سی اور واٹر بورڈ حکام سےرابطے میں ہیں۔
انہوں نے کہا کہ ڈیفنس کے6 علاقوں میں بجلی کی فراہمی معطل ہے، ان علاقوں میں پانی کی نکاسی کے بعد 6 سے 12 گھنٹوں میں بجلی بحال ہوگی۔
احسن انیس کا کہنا تھا کہ ڈیفنس اور کلفٹن کے علاوہ اس وقت بڑے پیمانے پرکسی علاقے میں بجلی بند نہیں ہے، صارفین بھی کہہ رہےہیں کہ فلیٹس کی بیسمنٹ میں پانی موجودہے لہٰذا نکاسی تک بجلی نہ کھولیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں